فوج کی سیاست میں مداخلت کوذہن سےنکال دیں،آرمی چیف

اسلام آباد : چیئرمین رضاربانی کی زیرصدارت ساڑھےچارگھنٹے طویل سینیٹ ہول کمیٹی اجلاس میں عسکری قیادت نے شرکت کی ۔ کمیٹی اجلاس میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، ڈی جی آئی ایس آئی، ڈی جی آئی ایس پی آر اور ڈی جی ملٹری آپریشن نے قومی سلامتی اور اپنے بیرون ملک دوروں سے متعلق تفصیلی بریفنگ دی۔

ذرائع کے مطابق ہول کمیٹی کے اجلاس میں آرمی چیف نے کہا کہ فوج کی سیاست میں مداخلت کوذہن سےنکال دیں۔ دھرنوں سےمتعلق فوج پرالزامات میں کوئی حقیقت نہیں۔

ذرائع نے بتایا کہ فیض آباد دھرنے سے متعلق آرمی چیف نے کہا کہ سعودی عرب جانے سے پہلے دھرنےختم کراناچاہتاتھا۔دھرناختم کرنےکی ذمہ داری آئی ایس آئی کودی گئی تھی۔ سعودی عرب جاتے ہوئےبھی اس حوالےسےہدایات دیتارہا۔

ذرائع کے مطابق آرمی چیف نے کہا کہ دھرنےوالےزاہدحامدکےاستعفےپرڈٹ گئےتھے۔سیاستدان فوج کوسیاست میں مداخلت کاموقع نہ دیں۔ میرا یقین ہےکہ ہماراکام صرف سرحدوں کی حفاظت ہے۔فوج آئین کی پابندہے،پارلیمنٹ کوسپریم ادارہ مانتےہیں۔

ذرائع نے دعویٰ کیا کہ آرمی چیف نے مزید کہا کہ مسلم ممالک کےدرمیان پل کا کردار اداکریں گے۔کسی کی لڑائی پاکستان میں نہیں آنے دیں گے۔امریکا اوربھارت سےتعلقات پالیسی کومدنظررکھ کرہوں گے۔بلاک شناختی کارڈ کے حوالے سے رپورٹ چیئرمین سینیٹ کو دے سکتے ہیں۔

آرمی چیف بذریعہ ہیلی کاپٹر پارلیمنٹ ہاؤس پہنچنے تو ڈپٹی چیئرمین سینیٹ مولانا عبد الغفور حیدری نے ان کا استقبال کیا جس کے بعد وہ چیئرمین سینیٹ کے چیمبر میں چلے گئے۔

چیئرمین سینیٹ رضا ربانی نے آرمی چیف کو ’’جمہور گلی‘‘بھی دکھائی جس میں قیام پاکستان کے بعد سے لے کر اب تک جمہوریت کے لئے خدمات انجام دینے والی شخصیات کی تصاویر آویزاں ہیں۔

ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل نوید مختار اور ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور آرمی چیف کے ہمراہ پارلیمنٹ ہاؤس پہنچے۔ ڈی جی ملٹری آپریشن میجر جنرل ساحر شمشاد نے ان کی آمد سے قبل وہاں انتظامات کا جائزہ لیا۔

پورے سینیٹ پرمشتمل ایوان کی کمیٹی کے اجلاس میں ڈی جی ملٹری آپریشنز نے بریفنگ میں بتایا کہ سات جنوری 2017 کو فوجی عدالتوں کی مدت ختم ہونے پر مقدمات پر کاروائی روکی گئی 28 مارچ کو فوجی عدالتوں کی مدت میں توسیع کی گئی۔

بریفنگ میں بتایاگیا کہ جنرل قمر جاوید باجوہ کے آرمی چیف بننے کے بعد فوجی عدالتوں کو 160 مقدمات بھیجوائے گئے، جن میں سے 33 پر فیصلہ سنایا گیا، 8 کو سزائے موت اور 25 کو قید کی سزا دی گئی۔

آپریشن رد الفساد کے تحت خیبر پختونخوا ،فاٹا میں 1249 آپریشن کیے گئے ، پنجاب میں 13011 ،بلوچستان میں 140 سندھ میں 2015 آپریشن کیے گئے،120 مقدمات 19 نومبر 2017 کو فوجی عدالتوں میں بھیجوائے گئے۔

قبل ازیں ڈی جی آئی ایس پی آر میجرجنرل آصف غفور نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ اجلاس میں ایک گھنٹہ بریفنگ ہوئی اور تین گھنٹے سوال و جواب کا سیشن ہوا۔ اجلاس کے دوران دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی حکمت عملی پر بریفنگ بھی دی گئی، اجلاس میں ڈی جی ایم او نے سیکیورٹی سے متعلق تفصیلی بریفنگ دی۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ اس دوران بہت اچھے انداز میں سوال و جواب کا سیشن ہوا، سینیٹرز نے آرمی چیف اور ان کی ٹیم کی آمد پر خوشی کا اظہار کیا، سینیٹرز نے افواج پاکستان کے کردار کا بھی اعتراف کیا۔انہوں نے کہا کہ مطابق سیشن میں تمام سوالات میرٹ پر کیے گئے اور آرمی چیف نے ان کے تفصیلی جوابات دیے ۔

ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق اجلاس میں اتفاق کیا گیا کہ پاکستان کو لاحق تمام موجودہ خطرات کا مل کر مقابلہ کریں گے۔اجلاس میں یہ بھی اتفاق ہوا کہ ہم سب مل کر آگے چلیں گے۔

ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفور نے طویل انتظار کے لیے صحافیوں کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ اجلاس سے متعلق تفصیلی پریس کانفرنس آئندہ تین سے چار روز میں کریں گے۔

سینیٹ کی ہول کمیٹی اجلاس کا اعلامیہ جاری کردیاگیا ہے جسکے مطابق پالیسی گائیڈلائن کی تیاری کے لیے پورے ایوان کی کمیٹی کااجلاس ہوا۔

اعلامیے میں کہا گیاہے کہ آرمی چیف اورڈی جی ایم اونےان کیمرہ اجلاس کوبریفنگ دی۔اجلاس میں سینیٹ کمیٹی کوخطےکی بدلتی صورتحال پر بھی بریفنگ دی گئی۔ اجلاس میں چیئرمین سینیٹ نےخارجہ پالیسی پرکمیٹی کےکردارپربریفنگ دی۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay