برصضیر کی سریلی اور منفرد گلوکارہ ملکہ پکھراج کو مداحوں سے بچھڑے 16 برس بیت گئے

برصضیر کی سریلی اور منفرد گلوکارہ ملکہ پکھراج کو مداحوں سے بچھڑے 16 برس بیت گئے۔

ملکہ پکھراج کا اصل نام حمیدہ تھا اور وہ 1910ءمیں ہمیر پور سدھڑ نزد اکھنور (جموں) میں پیدا ہوئی تھیں۔وہ پہاڑی راگوں کو کمال خوبی سے گاتی تھیں اور ان کی یہی خوبی ان کو دیگر گلوکاروں سے ممتاز بناتی تھی۔

 ملکہ پکھراج اردو اور فارسی زبانوں پر عبور اور ادب کا اعلیٰ ذوق رکھتی تھیں۔ حفیظ جالندھری کا مشہور گیت ابھی تو میں جوان ہوں اور عدم کی غزل وہ باتیں تیری فسانے تیرے ان کی شناخت سمجھے جاتے تھے۔

ملکہ پکھراج کے شوہر سید شبیر حسین شاہ اعلیٰ تعلیم یافتہ سرکاری افسر تھے اور اردو کے مشہور ناول جھوک سیال کے خالق تھے۔ پاکستان کی مشہور گلوکارہ طاہرہ سید ان کی صاحبزادی ہیں۔ حکومت پاکستان انہیں صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی عطا کیا تھا۔

ملکہ پکھراج کی سوانح عمری ‘‘ سنگ سنگ ٹرو’’ کے نام سے شائع ہوئی تھی جسے سلیم قدوائی نے اردو سے انگریزی میں منتقل کیا تھا۔ملکہ پکھراج 4 فروری 2004ءکو لاہور میں وفات پاگئیں اور شاہ جمال کے قبرستان میں آسودہ خاک ہوئیں۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay