صحت مند رہنے کے لیے ہاتھ اچھی طرح دھوئیں

WASH-HAND

اس دنیا میں شاید ہی کوئی ذی شعور ہو جو بیمار ہونا چاہتا ہو کیونکہ بیماری چاہے چھوٹی ہو یا بڑی اس سے انسان کے معاملات زندگی شدید متاثر ہوتے ہیں ۔
کیونکہ بیماری کی وجہ سے انسان کی طبیعت میں بیزاری  پیدا ہوتی ہے اور اکتاہٹ   کے  ساتھ کام میں جی نہیں لگتا ہے اس کے ساتھ ہی علاج معالجے میں ایک کثیر رقم خرچ ہو جاتی ہے ۔
ڈاکٹرز ہوں یا بڑے بوڑھے سب کا یہ ہی کہنا ہے کہ پرہیز علاج سے بہتر ہے ۔کیونکہ احتیاط سےبہت سی بیماریوں سے نہ صرف بچا جا سکتا ہے بلکہ اس سے بیماریوں کا شکار ہو نے کے امکانات میں بھی کمی ہوتی ہے ۔

اگر آپ بھی صحت مند زندگی گزارنا چاہتے ہیں تو اپنی روزمرہ زندگی میں ہاتھ دھونے کی عادت کو اپنا لیں کیونکہ یہ وہ عادت ہے جو بہت سی بیماریوں کا علاج ہے ۔

صحت کے اِداروں کے مطابق ہاتھ دھونا بیماریوں اور اِن کے پھیلاؤ سے بچنے کا ایک بہترین طریقہ ہے۔‏ عام طور پر لوگوں کو نزلہ،‏ زکام اور فلو اِس لیے ہوتا ہے کیونکہ وہ گندے ہاتھوں سے اپنی ناک یا آنکھوں کو ملتے ہیں۔‏ اِن بیماریوں سے بچنے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ آپ دن میں اکثر ہاتھ دھوئیں۔‏

حفظانِ‌ صحت کے اصولوں پر عمل کرنے سے تو آپ زیادہ سنگین بیماریوں سے بھی بچ سکتے ہیں جیسے کہ نمونیا اور دست وغیرہ۔‏ ایسی بیماریوں کی وجہ سے ہر سال 20 لاکھ سے زیادہ بچے موت کا شکار ہوتے ہیں جن کی عمر پانچ سال سے کم ہوتی ہے۔‏ ہاتھ دھونے کی معمولی عادت اپنانے سے ایبولا جیسی جان‌لیوا بیماری کے پھیلنے کا اِمکان بھی کم ہو سکتا ہے۔‏
بعض صورتوں میں ہاتھ دھونا بہت ہی ضروری ہوتا ہے تاکہ ہماری یا دوسروں کی صحت کو خطرہ لاحق نہ ہو،‏ مثلاً ٹائلٹ اِستعمال کرنے کے بعد ،بچوں کے پیمپر بدلنے  کے بعد،کسی زخم پر مرہم‌پٹی کرنے سے پہلے اور اِس کے بعد،کسی بیمار شخص سے ملنے سے پہلے اور ملنے کے بعد،سبزیاں یا گوشت وغیرہ کاٹنے،‏ پکانے،‏ کھانے اور دوسروں کو پیش کرنے سے پہلے،چھینک مارنے،‏ کھانسی کرنے یا ناک صاف کرنے کے بعد،کسی جانور یا اُس کے فضلے کو چُھونے کے بعداور کوڑا کرکٹ پھینکنے کے بعد وغیرہ ۔

یاد رکھیں کہ ہاتھ دھونے کا مطلب یہ نہیں کہ آپ کے ہاتھ واقعی صاف ہو گئے ہیں۔‏ تحقیق سے پتہ چلا ہے کہ جو لوگ عوامی ٹائلٹ اِستعمال کرتے ہیں،‏ اُن میں سے بہت سے یا تو ہاتھ دھوتے ہی نہیں اور اگر دھوتے ہیں تو صحیح طرح نہیں دھوتے۔‏

ہاتھ دھونے کا صحیح طریقہ کیا ہے؟‏

پہلے نلکے کے نیچے ہاتھ رکھ کر اِنہیں اچھی طرح گیلا کریں اور پھر صابن لگائیں۔‏

ہاتھوں کو اچھی طرح مل کر جھاگ بنائیں،‏ ناخن صاف کریں،‏ انگوٹھے صاف کریں،‏ ہاتھوں کی پُشت اور اُنگلیوں کے درمیان خلا کو صاف کریں۔‏

کم‌ازکم 20 سیکنڈ تک ہاتھ ملتے رہیں۔‏

صاف پانی سے دھوئیں۔‏

ٹشو یا صاف تولیے سے ہاتھ خشک کریں۔‏

یہ ساری باتیں معمولی لگتی ہیں لیکن یہ بیماریوں کے پھیلاؤ کو روکنے اور لوگوں کو موت کے مُنہ میں جانے سے بچا سکتی ہیں۔‏

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay