جس ملک میں چیف جسٹس چھاپے مارے تو ہم کیا کہیں گے ، آصف زرداری

کراچی: سابق صدر آصف علی زرداری کا کہنا ہے کہ جس ملک میں چیف جسٹس چھاپے مارے تو ہم کیا کہیں گے۔

گزشتہ روز بینکنگ کورٹ میں منی لانڈرنگ اسکینڈل کیس میں عدالت نے آصف زرداری کی درخواست ضمانت منظور کرلی تھی۔ آصف زرداری کی ضمانت 20 لاکھ روپے کی عوض ضمانت منظور کی گئی تھی۔

ہفتے کے روز منی لانڈرنگ کیس میں سابق صدر آصف علی زرداری ضمانت کے 20 لاکھ روپے جمع کراونے بینکنگ کورٹ آئے تو ضمانتی مچلکوں پر آصف زرداری اور ان کے ضامن عاشق حسین نے دستخط کیے۔

اس موقع پر سابق صدر آصف علی زرداری سے صحافی نے سوال کیا کہ آج پھر گاڑی میں آئے ہیں ہیلی کاپٹر میں نہیں آئے تو اس پر جواب دیتے ہوئے آصف زرداری کا کہنا تھا کہ ہیلی کاپٹر کی بات ہو رہی ہے دیکھیں کب ملتا ہے۔

صحافی نے سوال کیا کہ ہیلی کاپٹر تو سستا ہوگیا ہے۔ آصف زرداری نے کہا کہ سن رہا ہوں 50،55 میں سفر ہوتا ہے۔ صحافی نے کہا کہ چیف جسٹس نے اسپتال میں چھاپا مارا ہے تو انہیں شرجیل میمن کے کمرے میں سے شراب برآمد ہوئی ہے۔

آصف زرداری نے صحافی کے سوال پر جواب دیا کہ جس ملک میں چیف جسٹس چھاپے مارے تو ہم کیا کہیں گے۔

واضح رہے کہ 31 اگست کو بینکنگ کورٹ میں منی لانڈرنگ اسکینڈل کیس میں عدالت نے آصف زرداری کی درخواست ضمانت منظور کرلی تھی، آصف زرداری کی ضمانت 20 لاکھ روپے کی عوض منظورکی گئی تھی۔

مزید پڑھیے: جعلی اکاؤنٹس کیس: سابق صدر آصف زرداری کی عبوری ضمانت منظور

عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق صدر آصف زرداری کے وکیل فاروق ایچ نائیک نے کہا کہ ہائیکورٹ نے 15 دن کی حفاظتی ضمانت منظور کی ہے، مقدمے کا سامنا کرنے کو تیار ہیں، آصف زرداری کیخلاف درج ایف آئی آر بے بنیاد ہے، چارج شیٹ میں بھی نہیں لکھا منی لانڈرنگ آصف زرداری نے کی۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay