آئین شکنی کیس :9اکتوبر سے روزانہ سماعت کا فیصلہ

خصوصی عدالت نے سابق صدر جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کے آئین شکنی کیس کی سماعت 9اکتوبرسے روزانہ کی بنیاد پر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

خصوصی عدالت میں سابق صدر جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کے خلاف سنگین غداری کیس کی سماعت جسٹس یاور علی اور جسٹس نذراکبر نے کی۔

سماعت کے  آغاز میں وکیل نصیرالدین نے  معزز عدالت کو بتایا کہمقدمےمیں استغاثہ کےسربراہ مستعفی ہوچکےہیں جس پر جسٹس یاورعلی نےریماکس دیئے کہ پھربھی مقدمےکومکمل کرکےفیصلہ دیناہے۔

عدالت نے  استفسار کیا کہ بتایاجائےوزارت داخلہ نےپرویزمشرف کی واپسی کےلیےکیاکیا؟نمائندہ وزارت داخلہ نے جواب دیاکہ انٹرپول نےسیاسی معاملہ کہہ کرمعذرت کرلی ہے ۔

عدالت نے  ریماکس دیئے کہ لکھ کردیں ملزم کوواپس لانےکااس کےعلاوہ کوئی طریقہ نہیں آئندہ سےروزانہ کی بنیاد پرسماعت کریں گے ملزم کابیان اسکائپ پرریکارڈ کرنےپرجواب دیں ملزم بیان ریکارڈنہیں کراتاتوکارروائی آگےبڑھانےپرمعاونت کریں۔

عدالت نے آئین شکنی کیس کی سماعت 9اکتوبرسے روزانہ کی بنیاد پر کرنے کا فیصلہ سناتے ہوئے سماعت 9اکتوبر تک ملتوی کردی۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay