بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح کا 71واں یوم وفات

https://youtu.be/ocg_PJ6_g6M

بانی پاکستان بابائے قوم قائد اعظم محمد علی جناح کی 71 ویں برسی آج عقیدت و احترام سے منائی جارہی ہے ۔

آج کے دن کی مناسبت سے ملک بھر میں مختلف سیاسی، مذہبی اور سماجی تنظیموں کے زیراہتمام تقریبات وسیمینارز، کانفرنسز اور دیگر پروگرامز کا انعقاد کیا جاتا ہے۔

بانی پاکستانی کی برسی پر گورنر سندھ عمران اسماعیل اور وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ نے مزار قائد پر حاضری دی، پھول چڑھائے اور فاتحہ خوانی بھی کی۔

گورنرسندھ عمران اسماعیل کی مزارقائد پرمیڈیاسےگفتگو

 اس موقع پر  گورنرسندھ عمران اسماعیلنے مزارقائد پرمیڈیاسےگفتگو کرتے ہوئے کہاکہ دنیابھرمیں کشمیرکی آوازپہنچانےکی کوشش کررہے ہیں،پاکستان اپنے کشمیری بھائیوں کے ساتھ کھڑا ہے۔

گورنرسندھ نے مذید کہا کہ کراچی پاکستان کامعاشی حب ہے،بہتری اولین ترجیح ہے،شہرکی بہتری کےلیےمتعدد اقدامات کیے جارہے ہیں،کسی کااختیارکم کرنے،18ویں ترمیم کےخاتمےکاکوئی پروگرام نہیں۔

پاکستان قائداعظم کی مدبرانہ صلاحیتوں کا ثمر ہے،وزیراعلیٰ سندھ

وزیراعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ  نے کہاکہ پاکستان قائداعظم کی مدبرانہ صلاحیتوں کا ثمر ہے،پاکستان کوپرامن بنانے کےلیے سب کو کرداراداکرناہوگا،پوری قوم کشمیرکےساتھ کھڑی ہےاورہمیشہ ساتھ ہوگی۔

مرادعلی شاہ  کا کہنا تھاکہ بھارتی جارحیت کی مذمت کرتے ہیں،وفاق نےشہرقائدکےمسائل پرکوئی رابطہ نہیں کیا،گورنرصاحب وفاق کے نہیں سندھ کے بھی نمائندےہیں۔

دنیا کی کوئی طاقت پاکستان کو ختم نہیں کرسکتی۔ (لاہور30 اکتوبر،1947)۔

قائداعظم محمد علی جناح 25 دسمبر 1876 کو کراچی میں پیدا ہوئے، وہ پیشے کے اعتبار سے وکیل تھے۔ قائداعظم نے 1906 میں انڈین نیشنل کانگریس میں شمولیت اختیار کی تاہم 1913 میں آل انڈیا مسلم لیگ میں قیادت سنبھالی اور مسلمانوں کے لیے علیحدہ وطن کا مطالبہ کیا۔

ہم سب پاکستانی ہیں اور ہم میں سےکوئی بھی سندھی ، بلوچی ، بنگالی ، پٹھان یا پنجابی نہیں ہے۔ ہمیں صرف اور صرف اپنے پاکستانی ہونے پر فخر ہونا چاہئیے۔ (15 جون، 1948)۔

قائداعظم کے اصولوں کو خودداری کو اولیت حاصل تھی، انہوں نے قوم کے بکھرے ہوئے شیرازے کو جمع کیا۔شہر شہر جا کر قوم کو جھنجھوڑ جھنجھوڑ کر جگایا اور ایک پلیٹ فارم پر لاکھڑا کیا۔

انصاف اور مساوات میرے رہنماء اصول ہیں اور مجھے یقین ہے کہ آپ کی حمایت اور تعاون سے ان اصولوں پر عمل پیرا ہوکر ہم پاکستان کو دنیا کی سب سے عظیم قوم بنا سکتے ہیں۔ (قانون ساز اسمبلی 11 اگست ، 1947)۔

قائداعظم کا شمار ایسے لوگوں میں ہوتا جنھوں نے دنیا کا نقشہ بدل دیا ہو، قائداعظم کی انتھک محنت ، جرت اور شجاعت کا تحفہ ہمیں 14اگست 1947 کو پاکستان کی صورت میں ملا۔

پاکستان کی داستان ، اس کے لئے کی گئی جدوجہد اور اس کا حصول، رہتی دنیا تک انسانوں کے لئے رہنماء رہے گی کہ کس عظیم مشکلات سے نبرد آزما ہوا جاتا ہے۔ (چٹاگانگ 23 مارچ ، 1948)۔

قائداعظم محمد علی جناح آزادی کے ایک سال بعد 11 سمتبر 1948 کو دنیا سے رخصت فرما گئے۔ مفتی اعظم فلسطین نے قائداعظمؒ کی موت کو تمام عالم اسلامی کے لئے ‘‘عظیم نقصان‘‘ قرار دیا۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay