10 ایئرز چیلنج : ماحولیاتی آلودگی کے بارے میں آگاہی پھیلانے کا موقع

سماجی رابطے کی ویب سائٹس پر ’’10 ایئرز چیلنج ‘‘ صارفین میں کافی مقبول ہورہا ہے، شوبز اسٹارز سمیت اسپورٹس شخصیات بھی اس چلینج میں بھرپور حصہ لےرہے ہیں، لیکن دلچسپ تبصروں کیساتھ ساتھ کچھ سنجیدہ اور ماحولیاتی تباہی کے پوسٹ بھی سامنے آئے۔

ماحولیات کے تحفظ کے لیے کام کرنے والے ’ورلڈوائلڈلائف فنڈ‘ کے ماتحت ادارے ڈبلیو ڈبلیو ایف پاکستان کے اکاؤنٹ سے 10 ایئرز چیلنج کی ایک پوسٹ شیئر کی، جس میں 10 سال کے دوران جنگلات کے کٹاؤ اور ماحولیاتی تباہی کی منظر کشی کی گئی۔

بین الاقوامی ماحولیاتی ادارے ’گرین پیس‘ نے بھی ایک ایسی ہی تصویر ٹویٹ کی جس میں ایک آرکٹک سرکل پر پڑی برف کا 100 سال پرانا منظر پیش کیا گیا جبکہ ساتھ ہی موازنے کے لیے حال ہی میں کھینچی گئی ایک تصویر میں موحولیاتی تباہی کے باعث گلیشئر کا حیرت انگیز طور پر کم ہوجانا دکھایا گیا۔

دوسری جانب ڈبلیو ڈبلیو ایف کے برطانوی چیپٹر نے بھی ایک ایسی ہی تصویر ٹویٹ کی جس میں دکھایا گیا کہ موسمیاتی تبدیلی کے نتیجے میں دنیا بھر میں گلیشئر پگھل رہے ہیں جو جنگلی حیات کے لیے اچھا نہیں ہے۔ گلیشئر کے پگھلنے کی یہی رفتار رہی توگلیشئر چند سال بعد ختم ہو جائیں گے۔

بھارت میں بھی اس چلینج کو فلو کیا گیا اور ماحولیاتی تبدیلی پر بحث ہوئی، گرین پیس کی ایک کارکن روحی کمار نے دہلی کے مشہور انڈیا گیٹ کی تصاویر شیئر کیں، جس میں انڈیا گیٹ گرد آلود بادلوں میں چھپاہوا ہے، انہوں نے اپنی پوسٹ میں لکھا کہ نیلا آسمان ایک خواہش ہی نہیں ہے، ایسے نیلے آسمان کی تصاویر حقیقت بننی چاہیں۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay