ہم سے اپوزیشن کرنےکاحق نہیں چھیناجاسکتا،چیئرمین پیپلزپارٹی

رتوڈیرو: پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو کا کہنا ہے کہ ہم سے اپوزیشن کرنے کاحق نہیں چھیناجاسکتا۔

چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ وفاق سندھ کےعوام کےحقوق چھینناچاہتاہے ۔ وفاق سندھ کواس کاحصہ دے۔ عوام ان کے چہرے پہچانیں جوآپ کےحقوق چھینناچاہتےہیں وسائل اورادارےعوام کےہیں حکمران چھینناچاہتےہیں۔ پیپلزپارٹی ان سازشوں کو ناکام بنائے گی۔

بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ صوبوں کے پاس ذمہ داریاں زیادہ ہیں تو پیسے بھی زیادہ ملنے چاہئیں۔ عمران خان اپنےحلقےمیں نہیں جاتےوہاں وقت نہیں دیتے۔ ان کا کہنا تھا کہ پیسہ نہیں ملے گا توصحت کانظام کیسے بہترکریں گے ۔ یہ سلیکٹو احتساب ہورہاہے اور وفاقی وزیرپربھی الزام ہے انہیں گرفتارنہیں کیاجاتا۔

پیپلز پارٹی کے چئیرمین کا کہنا تھا کہ بلاول بھٹو میاں صاحب کوطبی بنیادوں پر6ہفتےکی ضمانت ملی ۔ شہبازشریف کانام بھی ای سی ایل سے نکال دیاگیا ہے ۔ نیب کاکالاقانون ہےجوسیاسی مخالفین کےلیےبنایاگیا ۔ نیب قانون پولیٹیکل انجیئنرنگ کیلئےبنایاگیاہے۔ وسائل اورادارے عوام کے ہیں،حکمران چھیننا چاہتے ہیں اور تحریک انصاف کرپشن کے خاتمے کیلئے سنجیدہ نہیں۔

بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ خان صاحب مخالفین پرجھوٹے مقدمات بنا رہے ہیں ۔ عمران خان کی سیاست نیب پرشروع ہوکرنیب پرختم ہوجاتی ہے۔ یہ نہیں کہوں گا کسی پر ہاتھ ہلکا اورکسی پربھاری رکھاگیاہے۔ پیپلزپارٹی کےلیےریڈلائن برداشت نہیں کرسکتے ۔ ان کا کہنا تھاکہ پیپلزپارٹی کے خلاف ہرسازش کو ناکام بنائیں گے۔ میں نے کوئی ملک دشمن بیان نہیں دیاتھا۔

پیپلز پارٹی کے چئیرمین کا کہنا تھا کہ میں نے صرف کالعدم تنظیموں کے خلاف کارروائی کی بات کی ۔ ملکی مستقبل کے لیے کالعدم تنظیموں کے خلاف کارروائی کرناہوگی۔ دنیا کوکیا پیغام جائے گا کہ دہشتگردوں کے سہولت کا رآج وزیرہیں۔ میراٹرین مارچ سیاسی نہیں تھا اورنہ کوئی ایجنڈاتھا ۔

بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ میاں صاحب کامارچ سیاسی تھاجومقاصدتھےوہ حاصل کیے۔ آصف زرداری مجھ سےزیادہ سندھ کے دورے کرچکے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم سے اپوزیشن کرنے کاحق نہیں چھیناجاسکتا۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay