برکتِ رمضان کی مذہبی اور خوبصورت ٹرانسمیشن شبیر ابو طالب کے ساتھ صرف نیوزون پر

https://www.youtube.com/watch?v=rQwshpKpLLQ

”ارشاد باری تعالیٰ ہے کہ رمضان کا مہینہ ہے جس میں قرآن نازل کیا گیا ، لوگوں کے لیے رہنما کربنااور نہایت واضح دلیلوں کی صورت میں جو اپنی نوعیت کے لحاظ سے سراسر ہدایت بھی ہیں اور حق و باطل کا فیصلہ بھی ۔ سو تم میں سے جو شخص اِس مہینے میں موجود ہو ، اُسے چاہیے کہ اِس کے روزے رکھے ۔

اور جو بیمار ہو یا سفر میں ہو تو وہ دوسرے دنوں میں یہ گنتی پوری کر لے۔ (یہ رخصت اِس لیے دی گئی ہے کہ) اللہ تمھاے لیے آسانی چاہتا ہے اور نہیں چاہتا کہ تمھارے ساتھ سختی کرے ۔ اور (فدیے کی اجازت) اِس لیے (ختم کر دی گئی ہے) کہ تم روزوں کی تعداد پوری کرو، (اور جو خیرو برکت اِس میں چھپی ہوئی ہے ، اُس سے محروم نہ رہو)۔ اور (اِس مقصدکے لیے رمضان کا مہینہ) اِس لیے (خاص کیا گیا ہے) کہ (قرآن کی صورت میں) اللہ نے جو ہدایت تمھیں بخشی ہے ، اُس پر اُس کی بڑائی کرو اور اِس لیے کہ تم اُس کے شکر گزار بنو۔ “(البقرہ : ۵۸۱)۔

نیوز ون کی برکت رمضان ٹرانسمیشن میں ہر نیا دن ایک نئی بات ،نیا پیغام اور نیا انداز آپ کے سامنے پیش کیا جاتا ہے تاکہ ہمارے معاشرے کی اصلاح ہو اوردیکھنے والے اسلامی احکامات سے آگاہی حاصل کر سکیں ۔

یومِ بدر   

آج  کے پروگرام کا  ابتدائی  موضوع یومِ بدر تھاجس پر میزبان  شبیر  ابو طالب نے بات کی ۔

ہتھیار ہیں اوزار ہیں افواج ہیں لیکن ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ وہ تین سو تیرہ کا لشکر نہیں ملتا

سنہ 3 ھجری 17 رمضان المبارک مقام بدر میں تاریخ اسلام کا وہ عظیم الشان یادگار دن ہے جب اسلام اور کفر کے درمیان پہلی فیصلہ کن جنگ لڑی گئی ۔ اللہ کی خاص فتح ونصرت سے 313 مسلمانوں نے اپنے سے تین گنا بڑے لاؤ و لشکر کو اس کی تمام تر مادی اور معنوی طاقت کے ساتھ خاک چاٹنے پر مجبور کر دیا۔

دعائے رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم اور جذبہ ایمانی سے ستر جنگجو واصل جہنم ہوئے،چودہ شجاع صحابہ کرام نے جامِ   شہادت  نوش کیا ۔

اس دن حضور ﷺ نے یہ دعا فرمائی تھی : ’’اے اﷲ! میں تجھ سے سوال کرتا ہوں کہ اپنا وعدہ اور اقرار پورا کر، یا اﷲ! اگر تیری مرضی یہی ہے (کہ کافر غالب ہوں) تو پھر زمین میں تیری عبادت کرنے والا کوئی نہیں رہے گا‘‘۔ اسی لمحے رب کائنات نے فرشتوں کو وحی دے کر بھیجا:’’میں تمھارے ساتھ ہوں، تم اہل ایمان کے قدم جماؤ، میں کافروں کے دل میں رعب ڈال دوں گا، سنو! تم گردنوں پر مارو (قتل) اور ان کی پور پور پر مارو۔‘‘ (سورۂ انفال آیت 12)۔

آو بات کریں

آو بات کریں  سیگمنٹ میں  آج کا موضوع  اپنے  ملک کی  برائی کرنا  تھا۔  مشہور  کہاوت ہے کہ  جس  تھالی  میں  کھانا  اس ہی میں چھید کرنا  ۔ یہ مثال  ان کوگوں پر پوری اترتی ہے  جو رہتے تو اس پاک  سر زمین پر ہیں مگر انکا  دل  کسی  اور  دیس میں  جا کر آباد ہونےکا ہوتا ہے ۔ اپنے ملک میں رہتے ہو اس ہی برائی کرتے ہیں۔یہ ہمارا اخلاقی  اور سماجی  بحران ہے  کہ  اپنی  آزادی  اور وطن کی  قدر نہیں  کرتے۔

یاد رکھیں   جو مذہبی ،سیاسی  ،معاشرتی  معاشی  اورسماجی  آذادی  اس ملک میں ہے وہ  کسی  اور ملک میں  نہیں  جو  اخلاقی  اقدار  اس پاک سر زمین  میں ہیں  وہ کہیں  اور نہیں  ۔

غور کیا جائے جو اپنے ملک کی برائی  کرنے کی عادت  ان لوگوں میں  بھی زیادہ ہوتی ہے جو  یا تو ایک باربیرونِ ملک کا ایک چکر لگا کے  آجائیں  ۔  دوسری ہماری نوجوان  نسل  جو انٹرنیٹ پر مغربی ممالک کی  رونقوں اور رعنائیاں  انکی چکاچوند سے متاثر  ہو کر  ان کا کلچر  اور  اسٹائل آف لیونگ اپنانا چاہتے ہیں ۔

 قصص اسلام

قصص اسلام سیگمنٹ میں آج کا موضوع رسول ﷺ کے  دادا حضرت عبدالامطلب  کے واقعات زندگی تھا ۔ بیرسٹر احتشام امیر الدین  نے قرآن  و حدیث کی  روشنی میں رسول ﷺ کے  دادا حضرت عبدالامطلب کے واقعات زندگی پر بات کی ۔

احتیاط لازم ہے

 آج کے احتیاط لازم ہے سیگمنٹ میں آج کا موضوع لو بلڈ پریشر تھا ۔ حکیم رضا الہی نے لو بلڈ پریشر کی وجوہات، علامات، اور احتیاطی تدابیر کے حوالے  س بات کی  اور  بہترین  ہربل  اور طبی  نسخے بتائے ۔

یاد رہے کہ  ہائی بلڈ پریشر کے ساتھ ساتھ لو بلڈ پریشر کی وجہ سے بھی  کئی مشکلات پیش آتی ہیں کیونکہ  لو بلڈ پریشر میں خون کے دباؤ میں کمی واقع ہوجاتی ہے۔ زیریں فشارِ خون میں کمی بھی بعض اوقات موت کا باعث بن جایا کرتی ہے۔ جب بلڈ پریشر ضروری سطح سے نیچے گرتا ہے، تو اس کی رسد دماغ کی طرف کم ہونے لگتی ہے۔ دماغ کی طرف خون کی رسد کم ہونے سے مطلوبہ آکسیجن کی مقدار میں تعطل پیدا ہو جاتا ہے۔

لوبلڈپریشر میں  مبتلا  افراد گوشت، انڈا، کلیجی، چکنائی، تلی ہوئی غذائیں، مکھن، گھی، پنیر بالائی ملا دودھ اور بیکری مصنوعات و کولا مشروبات سے مکمل اجتناب برتیں، سگریٹ و چائے نوشی ترک کردی جائے۔

یاد رہے اگر دماغ چند سیکنڈ تک آکسیجن سے محروم ہو جائے تو بے ہوشی طاری ہو جاتی ہے اور اگر یہ محرومی منٹوں میں بدل جائے تو دماغ مردہ ہو جاتا ہے۔ دماغ چوں کہ پورے جسمِ انسانی کے افعال کنٹرول کرتا ہے یوں پورا جسم ہی موت کے منہ میں چلا جاتا ہے۔

ایک  نیکی

آج ہماری مہمان  جنرل ہیلتھ مینیجر پروگرام ھینڈز ڈاکٹر حمیرا نعیم تھیں جنہوں  نے  ادارےکے  قیام کی وجوہات اوراغراض ومقاصد کے بارے میں بتایا ۔اورساتھ ہی اپنے کام کرنے کے  طریقہ  کار سے بھی  آگاہ کیا ۔

رمضان المبارک  ہمیں ایثار  ، قربانی ،انکساری  اور  لوگوں کی  مدد کر نے   کا  درس دیتا ہے اور اس درس کو  سیکھتے ہوئے  ہمارے  وطن میں  ایسے بہت  سے لوگ موجود ہیں جو  دکھی  انسانیت  اور مجبور افرادکی مدد کر  رہے ہیں  ۔

مدحتِ مصطفیٰﷺ

” مدحتِ مصطفیٰﷺ” سیگمنٹ میں 20 سال  کی  عمر تک  کے بچے  اور بچیوں کے درمیان نعت رسول ﷺ پیش کرنے کا مقابلہ ہے ۔  اس سیگمنٹ میں  تین معزز جج محترم  و مکرم  ذوالفقار علی  حسنی صاحب ، محمد  رضوان قادری اور علامہ نثار علی  اجاگر  ہمارے  ساتھ ہیں۔

مدحتِ مصطفیٰﷺ سیگمنٹ  میں  آج  بھی  دوٹیموں نے نعتِ رسولﷺ مقبول پیش کی ۔ٹیم امام بوصیری سےکاشان علی  اور محمد ابراہیم(وائیلڈکارڈ انٹری )اور ٹیم شیخ سعدی سے حاظ محمد انس  اور حسن علی حسینی نے شرکت کی ۔آج محمد ابراہیم اور حسن علی حسینی کے سفر کا یہاں  اختتام ہو گیا ۔

بزم علم وعقیدت

آج کی  اس علمی محفل کا موضوع اولادکی تربیت ہے ۔سید مولانا  مظفر حسین شاہ صاحب نے قرآن  وحدیث کی  روشنی میں موضوع کے حوالے سے گفتگو فرمائی ۔

اللہ اور اس کے رسول ﷺ نے اولاد کی تر بیت کو والدین کی اہم ذمہ داری قرار دیا ہے ۔ہمارے مذہب میں اولاد کی تربیت کے کئی سنہری اْصول موجود ہیں ۔اولاد کی تربیت میں ماں اور باپ دونوں کا کرداراہمیت رکھتا ہے۔ اولاد کی اچھی تربیت اولاد کا بنیادی حق ہے۔

اولاداللہ عزوجل کی ایک عظیم نعمت ہے ،جس کی اہمیت کااندازہ وہی لوگ کرسکتے ہیں ،جواس سے محروم ہیں ۔اس نعمت کاتقاضایہ ہے کہ اس کاشکراداکیاجائے ،جس کاطریقہ یہ  ہے کہ ان کی صحیح اسلامی تربیت کی جائے اورشریعت کے بتائے اصولوں کےمطابق ان کی پرورش کی جائے ۔
بصورت دیگریہ اولادانعام کی بجائے وبال بن جاتی ہے اوراپنے اعمال بدسے والدین کےلیے اذیت وبدنامی کاباعث بنتی ہے ۔یہی وجہ ہے کہ قرآن شریف میں صالح اولادکی دعاکرنےکی ترغیب دلائی گئی ہے۔رب ہب لی من الصالحین ۔فی زمانہ اولادکی تربیت کےحوالے سے بہت زیادہ کوتاہی دیکھنے میں آرہی ہے ۔

دین واخلاق کادیوالیہ نکل چکاہے ،بچےوالدین کے سامنے غیرشرعی امورومشاغل میں مصروف رہتے ہیں ،لیکن وہ انہیں روکتے ہیں نہ سرزنش کرتے ہیں ،حالانکہ یہ ضروری ہے ،ورنہ وہ بھی شریک گناہ ہوں گے ۔

افطار مزیدار

آج  کے  افطار مزیدار سیگمنٹ میں  شیف معراج نےتوا چکن کباب مزیدارجوکہ یقیناً افطار کا لطف دوبالا کر نے کے لیے بہترین ہے ۔

توا کباب بنانے کی ترکیب :اجزاء:قیمہ :آدھا کلو، پپیتا: ایک چائے کا چمچ ، گرم مصالحہ :ایک چائے کا چمچ ، ہری پیاز: ایک عدد ،نمک :ایک چائے کا چمچ ،ہرا دھنیا: دو کھانے کے چمچ ،ہری مرچیں : چھ عدد ،لال مرچ :ایک چائے کا چمچ ،ادرک لہسن :  ایک چائے کا چمچ

ترکیب:قیمے میں نمک٬ لال مرچ٬ پپیتا٬ ادرک٬ لہسن اور گرم مصالحہ ملا کر چاپر میں چاپرائس کرلیں- اب اس میں باریک کٹا مصالحہ شامل کر کے کباب بنائیں اور توے پر سینک لیں- توا کباب تیار ہیں۔

برکتِ افطار

ﺷﺮﻭﻉ ﻛﺮﺗﺎ ﮨﻮﮞ اللہ تعالٰی ﻛﮯ ﻧﺎﻡ ﺳﮯ ﺟﻮ ﺑﮍﺍ ﻣﮩﺮﺑﺎﻥ ﻧﮩﺎﯾﺖ ﺭﺣﻢ ﻭﺍﻻ ﮨﮯ۔سب تعریفیں اللہ تعالٰی کے لیے ہیں۔ جو تمام جہانوں کا پالنے والا ہے۔بڑا مہربان نہایت رحم کرنے والا۔بدلے کے دن (یعنی قیامت کا) مالک ہے۔ ہم صرف تیری ہی عبادت کرتے ہیں اور تجھ سے ہی مدد چاہتے ہیں۔ہمیں سچی اور سیدھی راہ دکھا۔ اُن لوگوں کا راستہ جن پر تو نے انعام کیا ۔ ان کا نہیں جن پر غضب کیا گیا اور نہ گمراہوں کا۔

افطار کا وقت وہ وقت ہوتا ہے جس وقت ہر دعا قبول ہوتی ہے ۔اس لئے اپنے ہاتھوں کواٹھائیں اورمانگ لیں سب کچھ کیونکہ اللہ رب العزت عطا کرنے والا مہربان ہے۔

درسِ تراویح

درسِ تراویح سیگمنٹ  میں  آج علامہ نثار علی  اجاگر  نے 17ویں  پارے کی  تفسیر مضامین اور خلاصہ  بیان کیا ۔

ڈس کلیمر:
نیوز ون کا یا اس کی پالیسی کا بلاگر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay