ہمیں ملکر بجٹ کو منظور نہیں ہونے دینا چاہیے، بلاول بھٹو

اسلام آباد: پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ ہمیں ملکر بجٹ کو منظور نہیں ہونے دینا چاہیے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمان سے اے پی سی پر بات چیت ہوئی ہے اور پرویز مشرف کے خلاف احتجاج میں جے یوآئی نے ساتھ دیا۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ کٹھ پتلیوں کے پاکستان میں جمہوریت کو نقصان ہورہا ہے جبکہ پیپلز پارٹی اور جے یو آئی کا الگ نظریہ ہے۔ عوام دشمن بجٹ کو منظور نہیں ہونے دیں گے۔ کٹھ پتلی حکمرانوں کو نکالنا ہوگا اور موجودہ بجٹ بیرونی بجٹ ہے، پاکستان کا نہیں۔

پی پی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ ہمیں ملکر بجٹ کو منظور نہیں ہونے دینا چاہیے اور میرا مؤقف حکومت مدت پوری کرے، مولانا کہتے ہیں نہ کرے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اے پی سی میں جو مؤقف طے ہوگا وہی سب جماعتوں کا ہوگا۔

ہم جون کے آخری عشرے میں اے پی سی کریں گے، مولانا فضل الرحمان

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا بلاول بھٹو کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ حکومت نے ملکی معیشت کا بیڑا غرق کردیا ہے اور بلاول کے مؤقف کی تائید کرتا ہوں۔

مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ دھاندلی شدہ الیکشن کے مؤقف پر آج بھی قائم ہیں اور غریب آدمی راشن خریدنے کے قابل بھی نہیں رہا۔ معاشی طور پر ہمیں غلام بنا دیا گیا ہے اور متفقہ مؤقف لے کر تمام سیاسی جماعتیں میدان میں آئیں گی۔

انکا کہنا تھا کہ تاریخ میں اتنے قرضے نہیں لیے گئے اور ہم جون کے آخری عشرے میں اے پی سی کریں گے۔ اے پی سی میں تمام اپوزیشن جماعتیں شریک ہوں گی۔

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا مزید کہنا تھا کہ پی پی، ن لیگ کے مزید لوگوں کے گرفتار ہونے کا امکان ہے جبکہ مولانا فضل الرحمان نے 24 جون کو اے پی سی بلانے کی تجویز دے دی۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay