تمام کشمیری اس بات پرقائم ہیں کہ انہیں حق مل کررہےگا،وزیراعظم آزادکشمیر

نیوزون کے خصوصی پروگرام “پرائم ٹائم ودتھ ٹی ایم” میں وزیراعظم آزادکشمیر فاروق حیدر ، امیرجماعت اسلامی سراج الحق اور چیئرمین کشمیرکمیٹی فخر امام نے پروگرام میں شرکت کی اور مسئلہ کشمیر پر میزبان طارق محمود سے تبادلہ خیال کیا۔

پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم آزادکشمیر فاروق حیدر نے کہا کہ تمام کشمیری اس بات پرقائم ہیں کہ انہیں حق مل کر رہے گا، امریکی صدر نے مسئلہ کشمیرپرثالثی کی پیشکش کی، بھارت مقبوضہ کشمیرمیں لوگوں کوحقوق نہیں دےرہا، مقبوضہ کشمیرمیں مارشل لانافذکیاہواہے اور بھارت نےاُجلت میں آرڈیننس کانفاذکروایا۔

ان کا کہنا تھا کہ کشمیری دہلی سرکارکی چالوں میں نہ آئیں، بھارت نےصورتحال کرفیووالی بنادی لیکن اعلان نہیں کیا، یاسین ملک حیات ہیں لیکن ان کی طبیعت خراب ہے، سیاسی وعسکری قیادتوں سےملاقاتیں ہوئیں۔ کل وزیرخارجہ سےملاقات میں مسئلہ کشمیرپربات ہوئی، اقوام متحدہ کے بے شمارفورم ہیں۔

وزیراعظم آزادکشمیرفاروق حیدر نے کہا کہ کشمیریوں کاکیس بہت مضبوط ہے، مقبوضہ کشمیرکامعاملہ یواین کی سلامتی کونسل میں اٹھائیں گے،بھارت نے اپنے پاؤں پرخودکلہاڑی ماری ہے۔

امیرجماعت اسلامی سراج الحق کاپروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ کشمیرکوفوجی چھاؤنی بنادیاگیاہے، مقبوضہ کشمیرمیں فلسطین جیسے   ہتھکنڈے استعمال ہو رہےہیں، پارلیمنٹ کامشترکہ اجلاس بلانااچھااقدام ہے اور حکومت میں پاکستان کی ذمہ داریاں مزیدبڑھ گئی ہیں، ایمرجنسی نافذ کرکے دنیا میں وفود کو بھیجناچاہیے، اگرکشمیربھارت کےقبضےمیں آگیاتوپنجاب ریگستان بن جائےگا، مسئلہ کشمیرمعمولی نہیں ہے، زندگی اورموت کامسئلہ ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ امریکا سے متعلق کسی غلط فہمی میں نہ رہاجائے، امریکا نے کبھی بھی پاکستان کاساتھ نہیں دیا، بھارت امریکا کے لیے معاشی منڈی ہے۔ افغانستان میں امریکامشکل سےدوچارہے۔

سراج الحق نے کہا کہ اقوام متحدہ کی قراردادوں پراقدامات کیے جائیں، مقبوضہ کشمیرکےعوام پاکستان سےبےانتہامحنت کرتےہیں، وادی کے عوام پاکستانی حکومتوں کی پالیسی سےناخوش ہیں، حکومتوں نےاپنی ذمہ داریاں پوری نہیں کیں۔ مشرف نےاصولی مؤقف سےانحراف کرکے 7 نکاتی ایجنڈےپراتفاق کیا۔

انہوں نے کہا کہ اوآئی سی، سلامتی کونسل کواپنےساتھ ملاناہوگا، وقت ضایع کیےبغیرکشمیریوں کےلیےکچھ کرناہوگا، مقبوضہ کشمیرمیں جماعت اسلامی کاامیرجیل میں ہے، بھارت سمجھتاہےآزادی کےنعروں کےپیچھےہماراہاتھ ہے، آئندہ ہفتےعالمی کانفرس کر رہے ہیں اور ہم آزاد کشمیرسمیت تمام شہروں میں احتجاج کریں گے۔

چیئرمین کشمیرکمیٹی فخرامام نے میزبان طارق محمود سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یواین کی قرارداد کے مطابق مقبوضہ کشمیرمتنازعہ علاقہ ہے، یواین کی1948کی قراردادوں پرعملدرآمدہوناچاہیے، مقبوضہ کشمیرمیں ایک لاکھ سےزائدکشمیری شہیدہوئے، کمیٹی کاکام کشمیریوں کے ساتھ ہونے والے مظالم کواجاگرکرناہے۔

فخرامام کا کہنا تھا کہ بھارت ہٹ دھرمی کامظاہرہ کررہاہے، یواین اوراوآئی سی سیکریٹری جنرل کومعاملےسےآگاہ کیا اور مقبوضہ کشمیرجیسی انسانی حقوق کی خلاف ورزی کہیں نہیں ہوتی۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay