ایٹمی جنگ کسی حالت میں نہیں ہونی چاہیے، سابق سفیرشاہدامین

نیوزون کے خصوصی پروگرام “پرائم ٹائم ودتھ ٹی ایم” میں سابق سفیرشاہدامین، سابق سیکریٹری دفاع نعیم خالدلودھی اور حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشال ملک نے پروگرام میں شرکت کی اور ملک کی موجودہ سیاسی صورتحال سمیت اہم معاملات پر میزبان طارق محمود سے تبادلہ خیال کیا۔

پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے سابق سفیرشاہد امین نے کہا کہ نریندرمودی تنگ ذہنیت کے مالک ہیں، مودی کےاقدام سے کشمیر کا مسئلہ حل نہیں ہوگا اور قومیں فیصلے قومی مفادپرکرتی ہیں اور تقریریں سن کرنہیں کرتیں۔

حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشال ملک نے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ کشمیرکےعوام کی توقعات پاکستان سے وابستہ ہیں، دہشتگرد بھارتی فوج کشمیریوں پرتشددکررہی ہے، وزیراعظم عمران خان کےبیان کاخیرمقدم کرتےہیں، کشمیریوں کوحق دلانے کے لیے ہرسطح پرکام کریں گے۔

مشال ملک نے کہا کہ عوامی طاقت ہی تبدیلی لے کرآتی ہے، روزانہ کی بنیادپرپاکستان میں ہرجگہ احتجاج ہورہاہے اور کشمیر میں بہت خطرناک صورتحال ہے۔

سابق سیکریٹری دفاع نعیم خالدلودھی کا کہنا تھا کہ نریندرمودی سےغلطی ہوئی ہے، غلطی کاخمیازہ کشمیریوں بھگتیں گے یامودی؟ سب سے پہلےمقبوضہ کشمیرمیں کرفیوہٹایاجائے۔ مقبوضہ کشمیرمیں خوراک،ادویات کی فراہمی یقینی بنائی جائے، تمام معاملات سفارتکاری سےحل نہیں ہوسکتے جب کہ مودی اور ٹرمپ ملے ہوئےہیں۔

سابق سفیرشاہدامین نے کہا کہ ایٹمی جنگ کسی حالت میں نہیں ہونی چاہیے، ایٹمی جنگ سےدنیاکی سلامتی خطرےمیں پڑسکتی ہے۔ جنگوں سے مسائل کاحل نہیں نکالاجاسکتا، بھارت کشمیریوں کاجذبہ آزادی روک نہیں سکتا۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay