بھارت جابرانہ ہتھکنڈے استعمال کرکے کشمیریوں کی آوازنہیں دباسکتا، صدرمملکت

اسلام آباد: صدرمملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ بھارت جابرانہ ہتھکنڈے استعمال کرکے کشمیریوں کی آوازنہیں دباسکتا ہے جب کہ 50سال بعدمسئلہ کشمیرکوسلامتی کونسل میں زیربحث لاناکامیابی ہے۔

پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کا کہنا تھا کہ حکومت کاپہلاپارلیمانی سال مکمل ہونے پر مبارکباد دیتاہوں، حکومت اورپارلیمان پرنظررکھنامیراآئینی فریِضہ ہے، ہم سب عوام کی عدالت میں جوابدہ ہیں۔ ہمیں اپنےضمیرکی عدالت میں سرخروہونے کیلئےکام کرناچاہیے۔ پارلیمنٹ عوام کی امیدوں کامظہرہے اور 50سال بعدمسئلہ کشمیرکوسلامتی کونسل میں زیربحث لاناکامیابی ہے۔ بھارت نے یواین قراردادوں ،شملہ معاہدےکی خلاف ورزی کی۔

صدرمملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ اوآئی سی نے مقبوضہ وادی میں بھارتی اقدامات غیرقانونی قراردیے، بھارتی فاشست نظریے نے کشمیریوں کویرغمال بنایاہواہے۔ بھارت سلامتی کونسل اجلاس روکنےکیلئےایڑی چوٹی کازورلگاتارہا، بھارت جابرانہ ہتھکنڈےاستعمال کرکے کشمیریوں کی آوازنہیں دباسکتا۔ بھارت مقبوضہ کشمیرسےتمام پابندیوں خاتمہ کرے۔

ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ پاکستانی قوم کشمیری بھائیوں کےساتھ کھڑی ہے، معاملے پرعالمی برادری کی چشم پوشی دنیاکےامن کیلئےخطرہ ہے، 90لاکھ کشمیریوں کی زندگی کوشدیدخطرات لاحق ہوچکےہیں۔ ہم کسی موڑپرکشمیریوں کوتنہانہیں چھوڑیں گے، بھارت ایل اوسی پرشہری آبادی پرگولہ باری کررہاہے،بھارت مسلسل جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کررہاہے جب کہ پاکستان نے دراندازی کرنےوالےبھارتی طیارے کو مارگرایا۔

صدرمملکت نے کہا کہ وزیراعظم نےبھارتی پائلٹ کوجذبہ خیرسگالی کےطورپررہاکرنےکااعلان کیا، پاکستان کی امن کی خواہش کوکمزوری نہ سمجھاجائے۔ اقوام متحدہ مقبوضہ کشمیرمیں مبصرمشن بھیجے، سلامتی کونسل میں دوست ممالک خصوصاًچین کےتعاون پرمشکورہیں۔ پاکستان عالمی قوانین کےمطابق مسئلہ کشمیرکےحل کی حمایت کرتاہے اور کلبھوشن کوسنگین جرائم کی پاداش میں فوجی عدالت نے سزائےموت سنائی۔ عالمی عدالت نےکلبھوشن کی سزاکیخلاف بھارتی اپیل مستردکردی۔ بھارت ہمیشہ پاکستان میں تخریبی کارروائی میں ملوث رہاہے۔

ان کا کہنا تھا کہ مسلسل ترقی کااہداف ہماراقومی فریِضہ ہے، اسمگلنگ معیشت کودیمک کی طرح چاٹ جاتی ہے، معاشی اعتبارسےپاکستان مشکل دورسےگزررہاہے۔ حکومت کو2019کےبجٹ میں سخت فیصلےکرنےپڑے۔ محصولات کابڑاحصہ قرضوں کی ادائیگی میں خرچ ہو جاتا ہے۔ کرنٹ اکاؤنٹ خسارےمیں کافی کمی آئی ہے۔ ایک سال میں کابینہ کے50سےزائد اجلاس ہوئے، وزیراعظم  ہروزارت کی کارکردگی پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔ اداروں میں استحکام سےہی جمہوریت فروغ پاسکتی ہے۔ حکومت نےفاٹاکی تعمیروترقی کےلیےخطیررقم مختص کی، انضمام سےقبائلی علاقوں کوملک کےدیگرحصوں کی طرح ترقی کاموقع ملے گا۔

صدرمملکت نے کہا کہ اقتدارسنبھالاتومعیشت تباہی کےدہانےپرتھی، احتساب کوبالائےطاق رکھ کرسابق حکمرانوں نےملک کونقصان پہنچایا، ملک لوٹنےوالوں کااحتساب جاری ہے۔ حکومتی اقدامات سےٹیکس جمع کرانےوالوں کی تعدادمیں اضافہ ہوا، گزشتہ ادوارمیں کرپشن کا بازار گرم رہا۔ ایف بی آرمیں اصلاحات لائی جائیں۔ آئی ٹی کی مقامی مارکیٹ کوفروغ دیےبغیردنیاکیساتھ نہیں چل سکتے۔

ڈاکٹر عارف علوی کا کہنا تھا کہ حکومت اداروں کوجدیدخطوط پراستوارکرنےکاکام جلدمکمل کرے، ملک کی  ترقی میں اداروں اورسول سروسز کاکرداراہم ہے، حکومتی پالیسیوں سےترسیلات زرمیں اضافہ ہوا۔ انسانی حقوق کاتحفظ حکومت کی ذمہ داری ہے اور معاشرےکی اصلاح کیلئےمسجد اورمنبراہم ہیں۔ پارلیمنٹ خواتین کی وراثت جیسےبل جلدمنظورکرے، خواتین کومعاشرےمیں باوقاربناناہوگا۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay