فخرِ پاکستان ارفع کریم رندھاوا کو بچھڑے9 برس بیت گئے

دنیا بھر میں پاکستان کا نام روشن کرنے والی آئی ٹی ایکسپرٹ عارفہ کریم رندھاوا کی آج نویں برسی منائی جارہی ہے۔ ارفع کریم نے محض 9 سال کی عمر میں مائیکروسافٹ سرٹیفائیڈ پروفیشنل کا اعزاز حاصل کیا۔

ارفع کریم نے نو سال کی عمر میں شمارندیات کا امتحان (مائیکروسافٹ سند پیشہ ور) کامیاب کر کے عالمی شہرت حاصل کی۔

فخر پاکستان فیصل آباد کے ایک نزدیکی گاؤں رام دیوالی میں 2 فروری کو پیدا ہوئیں۔ آپ کے والد ایک آرمی افسر تھے۔

ارفع کریم کو صرف 10 سال کی عمر میں حکومت پاکستان کی جانب سے پرائیڈ آف پرفارمنس، صدارتی ایوارڈ، مادر ملت فاطمہ جناح طلائی تمغہ اور سلام پاکستان یوتھ ایوارڈ سے نوازا گیا۔ تاہم بل گیٹس نے ارفع کریم سے دس منٹ ملاقات کی اور پاکستان کے دوسرے چہرے کا نام بھی دیا گیا۔

دنیا کی کم عمر ترین آئی ٹی مائیکرو سافٹ سرٹیفائیڈ ارفع کریم کو 22 دسمبر 2016 کو مرگی کا دورہ پڑا، جسکے بعد وہ کومے میں چلی گئی۔ 26 دن کومے میں رہنے کے بعد ارفع 14 جنوری 2012 کو دم توڑ گئی۔ جسکی یاد آج بھی لوگوں کی دلوں میں زندہ ہے۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay