دہلی میں مسلمانوں کے قتل عام پر رجب طیب اور ایلس ویلز کی مذمت

بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں فسادات کے دوران مسلمانوں کے قتلِ عام کی ترکی کے صدر رجب طیب اردوان اور امریکا کی نائب وزیرِ خارجہ ایلس ویلز نے شدید مذمت کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ترک صدر رجب طیب اردوان نے بھارتی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت وہ ملک ہے جہاں ہندوؤں کے ہاتھوں مسلمانوں کا قتلِ عام کیا جا رہا ہے۔

رجب طیب اردوان نے بھارت میں مسلمانوں کے قتل عام کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت میں مسلمانوں کا قتلِ عام معمول کی بات بن چکا ہے۔

ادھر امریکی نائب وزیرِ خارجہ برائے جنوبی وسطیٰ ایشیائی امور نے دہلی میں مسلمنوں کو قتل و غارت کا نشانہ بنانے پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ تمام فریقین امن برقرار رکھیں اور تشدد کا راستہ اپنانے سے گریز کریں۔

امریکی نائب معاون وزیر خارجہ نے بھارت کے وزیرِ اعظم نریندر مودی سے امن کی بحالی کا مطالبہ بھی کیا ہے۔

واضح رہے کہ بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں بھارتی متنازع شہریت قانون کے خلاف مظاہرہ کرنے والے مسلمانوں پر بی جے پی اور آر ایس ایس کے غنڈوں کے حملوں کے بعد سے فسادات جاری ہیں۔

دہلی میں بھارتی حکومت اور پولیس کی سرپرستی میں جاری فسادات میں مرنے والوں کی تعداد 38 ہوچکی ہے، جبکہ 200 سے زیادہ زخمی ہیں۔  دہلی کی انتظامیہ نے دفعہ 144 میں 10 گھنٹے کی نرمی کی ہے، جبکہ ہزاروں پولیس اور پیرا ملٹری اہلکاروں کی پیٹرولنگ جاری ہے۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay