وفاقی حکومت ٹوئٹرسےنکل کرکچھ کرتی تویہ حالات نہ ہوتے،مرتضیٰ وہاب

کراچی : مشیر اطلاعات سندھ مرتضیٰ وہاب کی کا کہنا ہے کہ وفاقی حکومت ٹوئٹرسےنکل کرکچھ کرتی تویہ حالات نہ ہوتے،وزیراعظم کاقوم سےخطاب کوئی معنی خیزنہیں تھا،کل کےخطاب سےان کی ترجیحات کااندازہ لگایاجاسکتاہے۔

ترجمان سندھ حکومت مرتضی وہاب کنے کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کرونا کیلئے قائم کیا گیا 3 ارب کا فنڈ کل سے قابل عمل ہو گا، عملدرآمد کیلئے 5 رکنی کمیٹی تشکیل دیدی گئی ہے جس کی سربراہی چیف سیکرٹری سندھ کریں گے۔ ابھی تک صوبے میں844 ٹیسٹ کئے گئے جو 3 اسپتالوں میں کیے جا رہے ہیں۔ سندھ حکومت نے 10 ہزار ٹیسٹ کٹس کو درآمد کیا ہے۔

ان کا کہنا تھاکہ ریسٹورنٹس، دکانوں کی بندش کےحوالے سے مشکل فیصلہ کیا، میڈیکل، روزمرہ اشیا والی دکانوں پر اطلاق نہیں ہوگا، احکامات پر 100 فیصد عملدرآمد نہیں ہوا۔ آج بھی کچھ دکانیں، ریسٹورنٹس دیکھے جو خلاف ورزی کر رہے ہیں۔ پولیس کو کہا ہے سخت اقدامات اٹھانے پڑے تو اٹھائیں۔

انہوں نے کہا کہ لوگوں کو سمجھایا اقدامات سب کی بھلائی کیلئے ہیں، بہت سے لوگوں نے مدد کیلئے سندھ حکومت سے رابطہ کیا، کرونا کا علاج دنیا میں نہیں، احتیاط کی جا سکتی ہے، فیصلہ کر لیں 14 روز کیلئے خود کو قرنطینہ میں رکھیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ کرونا کے معاملے پر سہارا بننے کے بجائے سیاست شروع کر دی گئی، پی ٹی آئی کے دوستوں نے کہا سندھ کو بڑی تعداد میں کٹس دی گئیں، دکھائے گئے کاغذ پر کوئی دستخط ہے نہ کوئی اسٹیمپ ہے۔

sIسکھر کے 290 زائرین کے ٹیسٹ کا رزلٹ آ چکا ہے، 147 کا ٹیسٹ منفی، 143 کا مثبت آیا۔ یہ وہ لوگ ہیں جو تفتان بارڈر سے سکھر منتقل کئے گئے تھے، 9مزید زائرین میں وائرس کی تصدیق ہوئی ہے جس کے بعد متاثرین کی مجموعی تعداد 181 ہوگئی ہے۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay