قومی رابطہ کمیٹی کا مشرقی اور مغربی سرحدوں کی بندش میں توسیع کرنے کا فیصلہ

قومی سلامتی ڈویژن کے معاون خصوصی ڈاکٹر معید یوسف نے کہا ہے کہ قومی رابطہ کمیٹی نے آج سے مزید دو ہفتوں کیلئے ملک کی مشرقی اور مغربی سرحدوں کی بندش میں توسیع کا فیصلہ کیا ہے۔

چیئرمین این ڈی ایم اے لیفٹیننٹ جنرل محمد افضل اور صحت کے معاون خصوصی ڈاکٹر ظفر مرزا کے ساتھ آج اسلام آباد میں میڈیا بریفنگ سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس بندش میں افغانستان، ایران، بھارت اور کرتارپور کی سرحدیں شامل ہیں۔

ڈاکٹر معید نے کہا کہ بندرگاہیں بہتر سکریننگ کی سہولیات کے ساتھ کام کرتی رہیں گی۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے صحت کے معاون خصوصی ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا کہ کرونا وائرس کے پچیس مریض مکمل طور پر صحت یاب ہوگئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں اس وقت کرونا وائرس کے بارہ ہزار دو سو اٹھارہ مشتبہ کیسز ہیں جبکہ ایک ہزار چار سو آٹھ مصدقہ کیسز ہیں۔

ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا کہ ایک سو تہتر مزید کیسز گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں رپورٹ ہوئے ہیں اور اب تک گیارہ اموات ہوئی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ملک کے مختلف ہسپتالوں میں 725 مریض داخل کئے گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں اگلے ماہ کی چار تاریخ تک بین الاقوامی پروازوں پر پابندی ہے اور کل سے ملک سے بیرون ملک جانے والی پروازوں پر بھی پابندی ہوگی۔

ڈاکٹر معید نے کہا کہ مختلف بین الاقوامی ہوائی اڈوں پر پھنسے ہوئے پاکستانیوں کے لئے انتظامات کئے گئے ہیں اور تھائی لینڈ میں پھنسے پاکستانیوں کا ایک گروپ آج ملک پہنچے گا۔انہوں نے کہا کہ اسلام آباد سے گلگت کے سوا تمام مقامی پروازیں بھی معطل رہیں گی۔

اس موقع پر NDMA کے چیئرمین لیفٹیننٹ جنرل محمد افضل نے کہا کہ ملک بھر میں لیبارٹریوں کی تعداد بڑھائی جارہی ہے۔سندھ اور خیبرپختونخوا میں مزید تین تین لیبارٹریاں، پنجاب اور آزاد کشمیر میں دو دو، گلگت بلتستان میں ایک لیبارٹری قائم کی جارہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ لیبارٹریوں کی تعداد آئندہ 15سے 20 دنوں میں پچاس تک بڑھ جائیگی۔ انہوں نے کہا کہ NDMA ان لیبارٹریوں کو فعال بنانے کی غرض سے افرادی قوت کی کمی پورا کرنے کیلئے سو لیبارٹری ٹیکنیشنز کو چھ ماہ کیلئے کنٹریکٹ پر بھرتی کریگا۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay