ہمیں معاشی مشکلات وراثت میں ملیں،مشیرخزانہ حفیظ شیخ

مشیرخزانہ حفیظ شیخ  کا کہنا ہےکہ معیشت کی بہتری کےلیےاقدامات کیےجارہےہیں،لوگ کہتےہیں کہ ماضی کی بات نہ کریں،ہمیں معاشی مشکلات وراثت میں ملیں۔

مشیرخزانہ حفیظ شیخ  کا کہنا ہےکہ معیشت کی بہتری کےلیےاقدامات کیےجارہےہیں،لوگ کہتےہیں کہ ماضی کی بات نہ کریں،ہمیں معاشی مشکلات وراثت میں ملیں۔

 مشیرخزانہ حفیظ شیخ   نے کہا ہےکہ ماضی کی پالیسی کی وجہ سےمعیشت کوفائدہ نہ ہوسکا،ماضی میں ڈالرکوجان بوجھ کرسستارکھاگیا،ماضی میں ڈالرسستارکھ کردوسرےممالک کوفائدہ پہنچایاگیا، ماضی میں ڈالرکی قدرمصنوعی طریقےسےکم رکھی گئی۔

 حفیظ شیخ کا مزید کہنا ہےکہ پاکستان آئی ایم ایف کےپاس مجبوری میں گیا ،ماضی کی غلط پالیسیوں کی وجہ سےآئی ایم ایف کےپاس جاناپڑا، نوجوانوں کوروزگارکےمواقع فراہم کرنےکےلیےپرعزم ہیں۔

 ان لا لپما تھاکہ ماضی میں برآمدات بڑھنےپرتوجہ نہیں دی گئی،حکومت بہترپالیسیوں سےمعیشت میں استحکام لارہی ہے،کروناسےقبل ہماری کارکردگی کوعالمی اداروں نےسراہا، ہماری پالیسیوں کی تعریف کی گئی۔

مشیرخزانہ حفیظ شیخ نے کہاکہ برآمدات پرتمام ٹیکسزختم اورری فنڈ کےنظام کوبہتر کیا،5ہزاراربروپے قرض کی صورت میں واپس کرنےپڑے،درآمدات میں اضافے سےہماری انڈسٹری کونقصان پہنچا،ایسی پالیسی بنائیں گےجس سےبزنس مین کو آسانی ہو۔

مشیرخزانہ نے کہاکہ حکومت کاکام اچھی پالیسی بناکرنجی شعبے کوآگےلاناہے،بیرونی خسارہ 20 ارب ڈالرسے3ارب ڈالرلےکرآئے،بلوم برگ نےہماری اسٹاک مارکیٹ کوتیزترین اسٹاک مارکیٹ میں شامل کیا۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay