پی ڈی ایم آج ملتان میں سیاسی قوت کا مظاہرہ کرے گی

حکومت مخالف اتحاد پی ڈی ایم کی تمام سیاسی جماعتیں آج  ملتان میں عوامی طاقت کا مظاہر کریں گی۔ اپوزیشن نے ہر صورت قاسم باغ میں جلسہ کرنے کا اعلان کیا ہے کہ جبکہ قاسم باغ اسٹیڈیم کا مکمل کنٹرول ضلعی انتظامیہ کے پاس ہے۔

پنجاب حکومت نے قانون توڑنے والوں سے آہنی ہاتھوں سے نمٹنے کا اعلان بھی کیا ہے۔ انتظامیہ نے قلعہ کہنہ قاسم باغ جانے والے تمام راستے بند کر دیے ہیں۔ ملتان میں سیاسی پارہ گزشتہ3 دن سے مسلسل بڑھ رہا ہے اورعلی قاسم گیلانی سمیت درجنوں کارکن گرفتار ہیں۔

ابھی تک  قاسم باغ میں اسٹیج نہیں لگ سکا اور نہ ہی کرسیاں پہنچ سکیں۔ اسٹیڈیم سے پی ڈی ایم جماعتوں کے جھنڈے اور بینرز بھی اتار دئیے گئے۔

ملتان کے گھنٹہ گھر چوک کو آنے والے تمام راستے بند کردیئے گئے۔ شہر کے داخلی و خارجی راستوں کا پہرہ بھی سخت کردیا گیا ہے۔ قاسم باغ اسٹیڈیم کو تالے لگا کر بند کردیا گیا ہے۔

ملتان کے گھنٹہ گھر چوک میں پولیس اور لیگی کارکن آمنے سامنے آگئے۔ راناثنا اللہ پولیس کے ہاتھ نہ آئے۔ مگر متعدد کارکنوں کو دھر لیا گیا۔ شہر کے مرکزی چوک کو آنے والے تمام راستوں کو سیل کردیا گیا ہے۔

پیپلزپارٹی رہنما علی قاسم گیلانی درجنوں کرکنوں سمیت پولیس کی تحویل میں ہیں۔ سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کے چاروں بیٹوں کے خلاف مقدمات درج کیے جاچکے ہیں۔

انتظامیہ نے قاسم باغ اسٹیڈیم کے اطراف اور کچہری سے گھنٹہ گھرچوک تک سی سی ٹی وی کیمرے نصب کردیئے ہیں۔

ن لیگی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ جلسہ ناکام بنانے کےلیے راستے بند کردیئے گئے ہیں۔ حکومت غیر قانونی راستے اختیار کررہی ہے، سلیکٹڈ ووٹ چورٹولہ جلسے روکنے کیلئے سرتوڑ کوشش کررہا ہے، لوگ حکومت کے خلاف اپنا فیصلہ سنا چکے ہیں۔مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے پی ڈی ایم کا آج ملتان میں جلسہ ہو کر رہے گا ۔ جو بھی راستے میں آیا اس کی قوت توڑیں گے۔

کارکنوں کو ڈنڈا استعمال کرنے والوں کے خلاف ڈنڈا اٹھانے کی اجازت ہے۔ جلسہ گاہ کا رخ نہ کر سکے تو جیلیں بھر دیں گے۔حکومت چاہتی ہے ہم جنوری سے پہلے لانگ مارچ کریں۔ جلد اسلام آباد پہنچ کر حکومت کو اس کی اوقات بتائیں گے۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay