بجلی کی قیمتوں میں 92 پیسہ فی یونٹ اضافے کی درخواست جمع کرادی گئی

اسلام آباد : سی پی پی اے نے بجلی کی قیمتوں میں 92 پیسہ فی یونٹ اضافے کے لئے نیپرا میں درخواست جمع کرادی ہے۔

نیپرا کی جانب سے سی پی پی اے میں کی درخواست میں کہا گیا ہے کہ جنوری میں 7 ارب 72 کروڑ یونٹ بجلی پیدا ہوئی ہے۔ جبکہ بجلی کی پیداواری لاگت 51 ارب 66 کروڑرہی ہے۔ اور پیداوار پر فیول لاگت کا تخمینہ 5 روپے 75 پیسے فی یونٹ لگایا گیا تھا۔ مگر جنوری میں فیول لاگت 6 روپے 68 پیسے فی یونٹ رہی۔ 18 روپے 94 پیسے فی یونٹ مہنگی ترین بجلی ڈیزل سے پیدا کی گئی ہے۔ فرنس آئل سے 12 روپے 34 پیسے فی یونٹ بجلی پیدا ہوئی ہے۔ جبکہ ایل این جی سے 8 روپے اور قدرتی گیس سے 7 روپے فی یونٹ بجلی پیداہوئی ہے۔ جس میں سے 27 پیسے فی یونٹ بجلی لائن لاسز کی نذر ہوگئی ہے۔

نیپرا بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی درخواست پر 25 فروری کوسماعت کرے گا۔

واضح رہے کہ ایک ہفتے کے دوران دوسری بار بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی درخواست نیپرا میں جمع کرائی گئی ہے۔ 12 فروری کو بھی نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی  نے بجلی کی قیمت میں ایک روپے 95 پیسے اضافے کی منظوری دی تھی۔ منظوری میں نیپرا نے کہا تھا کہ فیصلے کا اطلاق 50 یونٹ تک غریب صارفین پر بھی یکساں ہوگا جس سے صارفین پر دو سو ارب روپے کا اضافی بوجھ پڑے گا۔ تاہم کے الیکٹرک کے صارفین پر فیصلے کا اطلاق نہیں ہوگا۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay