سینیٹ انتخابات،سپریم کورٹ نے صدارتی ریفرنس پر رائے سنادی

supreme-court

اسلام آباد : سینیٹ انتخابات اوپن بیلٹ سے کروانے سے  متعلق صدارتی ریفرنس پر سپریم کورٹ نے اپنی رائے سنادی،سپریم کورٹ کا کہنا ہے کہ سینیٹ انتخابات اوپن بیلٹ سےنہیں کرائےجاسکتے۔

سپریم کورٹ نے سینیٹ الیکشن اوپن بیلٹ کے ذریعے کروانے سے متعلق اپنی رائے میں کہا ہے کہ سینیٹ انتخابات اوپن بیلٹ سےنہیں کرائےجاسکتے سینیٹ انتخابات خفیہ ہی ہوں گے۔

 سپریم کورٹ کی رائے کے مطابق سینیٹ انتخابات آئین کےآرٹیکل226کےتحت ہوں گے الیکشن کمیشن کی ذمہ داری ہےکہ وہ آزادانہ اور شفاف الیکشن کروائے۔

سپریم کورٹ نے ہدایت کی ہے کہ الیکشن کمیشن شفاف الیکشن کےلیے ٹیکنالوجی کا استعمال کرے سیکریسی حتمی نہیں ہوتی،الیکشن کمیشن انتخابات کوشفاف بنائے سپریم کورٹ کا کہنا ہے کہ تمام ادارے الیکشن کمیشن کی معاونت کریں۔

سپریم کورٹ کے چیف جسٹس گلزاراحمدنےعدالت میں رائےسنائیفیصلہ چار ایک کی اکثریت سے سنایاگیا سپریم کورٹ کےجسٹس یحییٰ آفریدی نےاختلافی نوٹ لکھا۔

جسٹس یحییٰ آفریدی کااختلافی نوٹ میں کہنا تھا کہ صدرمملکت کاریفرنس واپس بھیجاجاتاہے ریفرنس واپس بھیجنےکی وجوہات بعدمیں بتائی جائیں گی صدارتی ریفرنس میں کوئی قانونی سوال نہیں صدارتی ریفرنس صدرمملکت کےاختیارکےدائرہ کارمیں نہیں آتا۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے25فروری کوصدارتی ریفرنس پررائےمحفوظ کی تھی۔

Junior - Taleem Aam Karaingay - Juniors ko Parhaingay