70 سال سے ملکی سیاست پر کچھ لوگوں کا قبضہ ہے، مولانا فضل الرحمان

لکی مروت: جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ 70 سال سے ملکی سیاست پر کچھ لوگوں کا قبضہ ہے۔

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا تجوڑی میں ایم ایم اے کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ 25 جولائی کو ایم ایم اے کے امیدوار کامیابی حاصل کریں گے اور پاکستان کو بنے 70 سال ہوگئے ہیں لیکن ملکی سیاست پر قبضہ ہے۔

مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ ملکی قیادت بنانے کا اختیار عوام  کے ہاتھوں میں ہے اور عوام کے ہاتھ  میں ووٹ کی طاقت ہے۔ ماضی میں تلوار سے جنگ لڑی جاتی تھی اور آج ووٹ کی پرچی سے جنگ لڑی جارہی ہے۔

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ آج ووٹ کی پرچی کو تلوارکی حیثیت حاصل ہے اور عوام اس تلوار سے باطل قوتوں کا خاتمہ کردیں۔ ایم ایم اے صوبے کے ساتھ ساتھ وفاق میں بھی حکومت بنائے گی۔

مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ ہمارا مقابلہ ان قوتوں سے ہے جو ملک میں مغربی تہذہب لانا چاہتی ہیں اور یہودیوں اور مغربی تہذیب کے لیے کوئی جگہ نہیں ہے۔ اسمبلی میں اقلیت میں ہونے کے باوجود ختم نبوت معاملے پر ڈٹ کر مقابلہ کیا ہے۔

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ راجا ظفر الحق رپورٹ میں پی ٹی آئی کاشفقت محمود چور نکلا اور شفقت محمود نے اعتراف کیا یہ کام خود نہیں عمران خان کے کہنے پر کیا ہے۔

مولانا فضل الرحمان کا مزید کہنا تھا کہ پی ٹی آئی ختم نبوت اور قادیانیوں کے قانون میں ترمیم کی مجرم ہے اور پی ٹی آئی نے قوم کی بیٹیوں کو ڈی چوک پر نچایا، بے حیائی عام کی ہے۔