حقانی نیٹ ورک کےسربراہ جلال الدین حقانی انتقال کرگئے

کابل : حقانی نیٹ ورک کےسربراہ جلال الدین حقانی انتقال کرگئے، جلال الدین حقانی کی افغانستان میں تدفین کردی گئی۔

خبرایجنسی کے مطابق افغانستان پر انتہائی اثر و رسوخ رکھنے والے عسکری گروہ حقانی نیٹ ورک کے بانی جلال الدین حقانی طویل علالت کے بعد انتقال کر گئے۔

جلال الدین حقانی گزشتہ کئی سالوں سے علیل تھے، جس کی وجہ سے وہ طویل عرصے سے منظر عام سے غائب تھے۔طالبان نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ حقانی نیٹ ورک کے سربراہ کو افغانستان میں سپرد خاک کردیا گیا۔

اس بات کی تصدیق ان کے بیٹے سراج الدین حقانی نے اپنے بیان میں کی۔ سراج الدین حقانی نے کچھ سالوں قبل اپنی تنظیم کی آپریشنل ذمے داریاں اپنے بیٹے سراج الدین حقانی کے سپرد کردیں تھی جوکہ اس وقت نیٹ ورک کے نائب رہنما ہے۔

جلال الدین حقانی افغانستان کے جنگجوؤں میں ممتاز اہمیت کے حامل رہے ہیں جن کی طالبان اور القاعدہ دونوں سے قربت تھی۔انھوں نے القاعدہ کے بانی اسامہ بن لادن کو سنہ 1990 کی دہائی میں تربیتی کیمپ قائم کرنے میں تعاون کیا تھا۔

جلال الدین حقانی کا تعلق افغانستان کے صوبہ پکتیکا سے تھا اور انھوں نے 1980 کی دہائی میں شمالی وزیرستان سے سابقہ سویت یونین کے افغانستان میں قبضے کے دوران منظم کارروائیاں کیں۔

امریکہ حقانی نیٹ ورک پر کئی بڑے بڑے حملے کرنے کا الزام عائد کرتا رہا ہے۔افغانستان میں نیٹو اور افغان افواج پر حملوں، کابل سمیت مختلف علاقوں میں شدت پسند واقعات کا الزام حقانی نیٹ ورک پر عائد ہے۔