افغان حکومت کو دھچکا، 4 اہم عہدیدار مستعفی

کابل: افغان صدر اشرف غنی کی کابینہ کے 4 اہم عہدے دار مستعفی ہوگئے۔ صدر اشرف غنی کے انتہائی قریبی ساتھی اور قومی سلامتی کے مشیر حنیف اتمر کی جانب سے پیش کردہ استعفیٰ قبول کرلیا گیا۔

افغان میڈیا کے مطابق افغانستان میں صدر اشرف غنی کی کابینہ کے 4 اہم عہدے داروں نےاستعفی دے دیا، استعفا دینے والوں میں افغان وزیر دفاع طارق شاہ بہرامی، وزیر داخلہ واعظ برمک، افغان خفیہ ایجنسی نیشنل ڈائریکٹوریٹ آف سیکورٹی کے سربراہ معصوم ستانکزئی اور مشیرِقومی سلامتی حنیف اتمار شامل ہیں۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ استعفے کی وجوہات سیکیورٹی امور پر اختلافات بتائے جاتے ہیں۔

دوسری جانب افغان صدر اشرف غنی کے انتہائی قریبی ساتھی اور قومی سلامتی کے مشیر حنیف اتمر کی جانب سے پیش کردہ استعفیٰ قبول کرلیا گیا۔جسکی تصدیق صدارتی ترجمان ہارون نے کی انکے مطابق قومی سلامتی کے مشیر حنیف اتمر کا استعفیٰ صدر نے قبول کرلیا۔

صدارتی ترجمان نے استعفیٰ سے متعلق کوئی ٹھوس جواز نہیں بتایا تاہم حنیف اتمر کے پیش کردہ استعفے کی کاپی میں کہا گیا کہ انہیں مرکزی قیادت سے پالیسوں اور اصولوں پر سخت تحفظات تھے۔