نواز شریف کی عاصمہ جہانگیر کے گھر آمد : اہلخانہ سے اظہار تعزیت

asma

کراچی: سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز معروف قانون دان عاصمہ جہانگیر کے گھر تعزیت کرنے کے لیے ان کے گھر پہنچے۔

سابق وزیراعظم نے عاصمہ جہانگیر کے انتقال پر گہرے دکھ کا اظہار کیا اور مرحومہ کے لئے دعائے مغفرت بھی کی ۔

اس موقع پر انھوں نے کہا کہ عاصمہ جہانگیر نے دکھی انسانیت کے لیے ہمیشہ وقت دیا اور دنیا سے اچھا نام کما کر گئیں انھوں نے مزید کہا کہ وہ ایک اچھی قانون دان، بہترین انسان اور غریبوں کی غمخوار تھیں جنہوں نے جمہوریت اور قانون کی حکمرانی کے لیے ہمیشہ کوشش کی۔

عاصمہ جہانگیر کے انتقال پر سندھ میں آج ایک روزہ سوگ کا اعلان

عاصمہ جہانگیر کے انتقال پر سندھ میں آج ایک روزہ سوگ کا اعلان کیا گیا اورمعروف قانون دان عاصمہ جہانگیر کی تدفین سرکاری اعزاز کے ساتھ کرنے کے لئے وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو خط لکھا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اس موقع پر سیاسی سرگرمیاں معطل رہیں گی اور پارٹی پرچم سرنگوں رہے گا۔

ترجمان بلاول ہاؤس کے مطابق آج پارٹی کی سرگرمیاں معطل رہیں گی اور صوبائی، ڈویژنل اور ضلعی سطح پر عاصمہ جہانگیر کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے ریفرنس کا اہتمام بھی کیا جائے گا۔

خیال رہے کہ نڈر ، باہمت ، سماجی کارکن، انسانی حقوق کی علمبردار اور سپریم کورٹ بار کی سابق صدر عاصمہ جہانگیر 66 برس کی گزشتہ روز عمر میں انتقال کرگئیں ۔

خاندانی ذرائع کے مطابق عاصمہ جہانگیر کی نماز جنازہ 13 فروری کو ادا کی جائے گی اور تدفین لندن میں مقیم بیٹی کی وطن واپسی کے بعد ہوگی۔

جمہوریت کی دلیل اور وکیل عاصمہ جہانگیر

غیرمعمولی صلاحیتوں کی حامل شخصیت عاصمہ جہانگیر 27 جنوری 1952 کو لاہور میں پیدا ہوئیں ۔ پنجاب یونیورسٹی سے قانون کی ڈگری حاصل کی 1980 میں لاہور کورٹ اور 1982 میں سپریم کورٹ سے اپنے کیریئر کا آغاز کیا۔

بعد ازاں سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کی پہلی خاتون صدر بنیں عاصمہ جہانگیر کو جنرل ضیاالحق کی حکومت کے خلاف احتجاج اور بحالی ۔
جمہوریت تحریک کا حصہ بننے کے پاداش میں 1983 میں جیل بھیجا گیا2007 میں پرویز مشرف کے دور میں وکلا تحریک میں سرگرم عمل بننے پر نظر بند کیا گیا

انھوں نے مشترکہ طور پر ہیومن رائٹس کمیشن اور وومنز ایکشن فورم کی بنیاد رکھی پاکستان میں جمہوریت اور انسانی حقوق کے لیے خدمات پر انھیں 2010 میں ہلالِ امتیاز اور ستارہ امتیاز دیا گیا ۔

عاصمہ جہانگیر کو 2014 رائٹس لائیولی ہوڈ ایوارڈ اور 2010 فریڈم ایوارڈ کے علاوہ اقوام متحدہ کے ادارے یونسیکو کی جانب سے بھی ایوارڈ سے بھی نواز گیا قانون کی بالادستی اور جمہوریت کے استحکام کے لیے ناقابل فراموش کردار ادا کرنے والی جمہوریت کی دلیل اور وکیل ہمیشہ کے لیے خاموش ہوگئی ۔
قانون و انصاف، جمہوریت اور انسانی حقوق کے لیے ان کی خدمات ہمیشہ سنہری حروف میں یاد رکھی جائیں گی ۔