پارٹی کو متحرک کرنے کی مہم شروع کر رہے ہیں،سعد رفیق

لاہور: وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کا کہنا ہے کہ پارٹی کو متحرک کرنے کی مہم شروع کر رہے ہیں۔قبل ازوقت انتخابات کی بات کرنیوالےاحمقوں کی جنت میں رہتے ہیں۔

لاہور میں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے سعد رفیق نے بتایا کہ آج پارٹی لیڈر نواز شریف کی زیر صدارت مشاورتی اجلاس ہوا۔ انہوں نے کہا کہ اجلاس میں کچھ فیصلےہوئے ہیں۔

سعد رفیق کا کہنا تھا کہ پارٹی کوفعال کرنےکی مہم شروع کررہے ہیں اور ن لیگ سینٹرل ورکنگ کمیٹی اورسینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کی تشکیل اسی ماہ ہو جائیگی۔ انہوں نے کہا کہ نوازشریف عوامی جلسوں سےخطاب کریں گے۔ انہوں نے اعلان کیا کہ اتوارکوایبٹ آباد میں مسلم لیگ کا جلسہ ہوگا جس میں پارٹی سربراہ عوام سے خطاب کریں گے۔

وفاقی وزیر ریلوے کا کہنا تھا کہ نواز شریف کے مزید جلسوں کے لیے شہروں اورتاریخوں کااعلان جلد کردیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ بظاہربروقت الیکشن میں کوئی رکاوٹ نہیں ہے۔

سعد رفیق کا کہنا تھا کہ قبل ازوقت انتخابات سےآئینی بحران پیداہوگا اور قبل ازوقت انتخابات کی بات کرنیوالےاحمقوں کی جنت میں رہتے ہیں جب کہ ہماری حکومت کی مدت چند ماہ ہے اورحلقہ بندیوں میں بھی چند ماہ ہی لگیں گے۔

پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ کے حوالے سے وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ قبل ازوقت انتخابات کی بات صرف عمران خان نے کی ہے اور پاکستان میں روایت رہی ہے سینیٹ کےانتخابات کےوقت کھلبلی مچ جاتی ہے۔ مردم شماری ہوگئی ہے اب قبل ازوقت انتخابات نہیں ہوسکتے۔

سعدرفیق کا کہناتھا کہ ہم نےکسی کووارنگ دی ہے اور نہ ارادہ ہے۔ تمام سیاسی جماعتوں کی ایک دوسرے بات چیت ہوتی رہتی ہے۔ آئینی ترمیم پرپیپلزپارٹی کا رویہ تعاون نہ کرنیوالا رہا ہے۔ اُمیدہے آئینی ترمیم کا معاملہ آج مشترکہ مفادات کونسل میں حل ہوجائیگا ہمیں مشترکہ مفادات کونسل کےنتائج کاانتظارکرناچاہیے۔

وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کا کہنا تھا کہ  ہم ملک میں سی پیک لے کر آئے اس لیے سزا تو ملنی تھی۔ ہم لوڈشیڈنگ ختم نہیں کرپائےتوبہت حد تک قابوپالیا ہے۔ سب کو معلوم ہے کہ میاں صاحب کو کیوں نکالا گیاہے۔