خورشیدشاہ کےبطوراپوزیشن لیڈرکردارکوسراہتاہوں،وزیراعظم

اسلام آباد : قومی اسمبلی آج اپنی 5 سالہ آئینی مدت پوری کررہی ہے ،اسپیکرایازصادق کی زیرصدارت قومی اسمبلی کا الوداعی اجلاس جاری ہے۔وزیراعظم شاہد خاقان عباسی موجودہ اسمبلی کے الوداعی اجلاس سے اظہارِ خیال کر رہے ہیں۔

اس موقع پر اسپیکرقومی اسمبلی کی جانب سےارکان میں سرٹیفکیٹ تقسیم  کیے گئے۔ اسپیکر قومی اسمبلی نے  ایوان کے الوداعی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قومی اسمبلی آج رات بجےتحلیل ہوجائےگی،اللہ کاشکراداکرتاہوں کے5سال خوش اسلوبی سےگزرے،انہوں نے کہا کہ مجھےاراکین کی جانب سےہرطرح کاتعاون حاصل رہا۔

انہوں نے کہا کہ پارٹیزنےجمہوریت کےلیےہاؤس کوبہتراندازمیں چلانےکی کوشش کی،حکومت کےبغیراپوزیشن چل سکتی ہےنہ ہی اپوزیشن کےبغیر حکومت، قائدحزب اختلاف نےاپوزیشن کی بہت اچھی نمائندگی کی۔اپوزیشن لیڈرکی جمہوریت کےلیےخدمات قابل قدرہیں۔

اسپیکر ایاز صادق کا کہنا تھا کہ تمام ارکان نےاس ہاؤس کوچلانےمیں بہت مددکی،پارلیمنٹ  نےآج تک187قانون پاس کیے، شاہ محمود،میرےسابق دوست عمران خان کابھی شکریہ اداکرتاہوں۔

انہوں نے ایوان کے اراکان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ شاہ محمودقریشی نےہاؤس کوچلانےمیں بہت رہنمائی کی،محموداچکزئی نےجمہوریت مستحکم کرنےمیں کوئی کسرنہیں چھوڑی، شیخ رشیداورجمشیددستی کابھی شکرگزارہوں،غلام احمدبلورسےمجھےرہنمائی ملی،اسلام آباد:چوہدری پرویزالہیٰ نےبہت مثبت کرداراداکیاا ور مولانافضل الرحمان نےبہت سےمسائل پرتوجہ دلائی۔

انہوں نے کہا کہ تمام ارکان کاشکرگزارہوں کہ آپ نےمجھےبرداشت کیا،سیٹ اَپ میں کوئی کوتاہی ہوئی ہوتومعذرت چاہتاہوں۔

ایوان سے اظہار خیال کرتے ہوئےئ وزیراعظم نے کہا کہ صاف وشفاف انتخابات وقت کی اہم ضرورت ہیں،انتخابات میں ایک دن کی تاخیر بھی نہیں ہونی چاہیے،جولائی میں عوام نےفیصلہ کرناہےوہی جمہوری فیصلہ ہوگا۔

:قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ہاؤس بہترین طریقےسےچلانےپرآپ کاشکریہ اداکرتاہوں،اسپیکرنےسب کواکھٹارکھا،کسی کوکمی محسوس نہیں ہونےدی،اسپکرصاحب کے عمل  نےجمہوریت کوتقویت دی اور جانبداری سےایوان کوچلایا۔

وزیراعظم نے کہا کہ مجھےپارٹی نے10ماہ پہلےیہ ذمہ داری سونپی تھی،خورشیدشاہ نےہمیشہ جمہوریت کوآگےبڑھانےکی بات کی،خورشید شاہ  کےبطوراپوزیشن لیڈرکردارکوسراہتاہوں۔انہوں نے ہمیشہ جمہوریت اورپارلیمنٹ کی بات کی۔

انہوں نے کہا کہ ایوان میں جب ضرورت پڑی اتفاق رائےنظرآیا، اس ایوان میں فاٹاکےانضمام پراتفاق رائےنظرآیا،فاٹابل پراپوزیشن کی بھی کوششیں رہیں۔شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ سول وعسکری قیادت نےملک میں امن بحال کیا،کراچی میں بھی امن قائم کیاگیا،کراچی میں امن کاقیام جمہوریت کی کامیابی ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ دوسری اسمبلی اپنی مدت پوری کررہی ہے،معاشی اشاریےبہتری کی نشاندہی کررہےہیں، چیلنجزکےباوجود6فیصدگروتھ بڑی کامیابی ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کودرپیش خطرات کاڈٹ کرمقابلہ کیا۔ 5سال میں حکومت نےبڑےجھٹکےبرداشت کیے۔

انہوں نے مزیدکہا کہ پاکستان کی خودمختاری پرکوئی آنچ نہیں آنےدی،نوازشریف نےتوانائی بحران پرقابوپاکردکھایا،جلدپاکستان سےفرنس آئل کاانحصارختم ہوجائےگا، ملک میں پہلی بارہم کوئلےکانظام لےکرآئےہیں۔

وزیراعظم کاکہنا تھا کہ آئندہ15سال ملک میں بجلی کی کوئی کمی نہیں ہوگی،موٹروےنیٹ ورک پاکستان میں انقلاب کاباعث بنےگا،پاکستان پرغیرملکی سرمایہ کاروں کااعتمادبڑھا،سی پیک آج ایک حقیقت ہے،سی پیک پرتمام سیاسی جماعتیں ایک پیج پرہیں۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہم نےملکی خارجہ پالیسی پرکوئی حرف نہیں آنےدیا، ہم نےہرفورم پرمسئلہ کشمیرکواٹھایا،5سال پہلےاورآج کےپاکستان میں بہت فرق ہے۔

قبل ازیں قائد حزب اختلاف خورشید شاہ نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم کوگارڈٓآف آنرملناجمہوریت کی فتح ہے۔ دوسری بارجمہوری حکومت مدت پوری کررہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ میری پوری کوشش رہی کہ تمام ارکان کوساتھ لےکرچلوں،کوشش کی سیاسی ماحول گالم گلوچ میں تبدیل نہ ہو،الزام تراشیاں بھی ہوتی رہیں ان کوبھی برداشت کرتےرہے،سب نےملکرپارلیمنٹ کومضبوط بنانےکی کوشش کی۔

خورشید شاہ کا کہناتھا کہ آج کےدن کوئی تلخ بات نہیں کرناچاہوں گا۔انہوں نے مزید کہا کہ الیکشن شیڈول آگیاہے،آج بھی سوال اٹھ رہاہے الیکشن ہوگایانہیں۔

خورشید شاہ نے اسپیکر ایاز صادق سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ کےساتھ بہت اچھاوقت گزارا، آپ کانام اچھےاسپیکرزکی تاریخ میں لکھاجائےگا۔

اپوزیشن لیڈر نےمزید کہا کہ جمہوریت کی بہتری کےلیےتعلیم کومضبوط کرناہوگا،تعلیم ہی واحدہتھیارہےجس سےملک مستحکم ہوسکتاہے۔

قومی اسمبلی  کے الوداعی اجلاس میں صدرکی تنخواہ میں اضافےکابل منظور کرلیا گیا لیکن اپوزیشن نےصدرکی تنخواہ میں اضافےکابل مستردکردیا۔

اس حوالے سے قائدحزب اختلاف خورشید شاہ نے کہا کہ حکومت  کے آخری دن یہ بل نہیں لاناچاہیےتھا،میرےخیال میں اس بل کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔

قومی اسمبلی کے الوداعی اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے ریاض پیرزادہ نے کہا کہ ایوان میں  خورشیدشاہ ہمارےاستادرہےان سےبہت کچھ سیکھا، گزارش کرتاہوں آپ میرےحلقےسےالیکشن لڑیں۔انہوں نے کہا کہ اچھےپارلیمنٹ ارکان کی عوام عزت کرتی ہے، پاکستان میں انصاف کابول بالاہونا چاہیے۔

قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ شیریں مزاری نے کہا کہ کورم کی نشاندہی کرناجمہوریت کاحصہ ہے،ہم نےاپوزیشن کاکرداربہت مثبت اندارمیں اداکیا۔

انہوں نے کہا کہ شیخ آفتاب نےبہت صبرکامظاہرہ کیا،شیخ آفتاب نےپوری اپوزیشن کوبرداشت کیا،خورشیدشاہ نےبطوراپوزیشن لیڈرہماری رائےپہنچائی۔شیخ آفتاب نےکاغذپھاڑنےکی بات یہ ساری دنیامیں ہوتاہے،کئی روایات کوہم نےپارلیمنٹ سےہی سیکھاہے۔

شیریں مزاری نے کہا کہ میرےلیےحکومتی ارکان کی طرف سےنازیبازبان استعمال ہوئی،میں معاملہ اللہ پرچھوڑدیاہے،اللہ اس کاحساب لےگا۔انہوں نے کہا کہ میں نےبھرپورکوشش کی ہےرکن ہونےکاکرداراداکروں،امریکاسےمتعلق کئی قراردادیں منظورکی گئیں،قرادادوں میں سےکسی ایک نقطےپرعملدرآمدنہیں ہوا۔

قومی اسمبلی میں آفتاب خان شیرپاؤ نے اظہارخیال کرتے ہوئے کہا کہ اسمبلی میں بڑےنشیب وفرازدیکھےلیکن اسپیکر اسمبلی  نےبردباری کامظاہرہ کیا۔بیرون ممالک کےدوروں میں بھی آپ نےاسمبلی کاوقاربلندکیا۔

آفتاب شیر پاؤ نے کہا کہ ملک میں امن وقانون کی بالادستی کےلیےایوان نےکرداراداکیا، اس ہاؤس میں تیزوتندلہجےبھی استعمال کئے،اپوزیشن کواکھٹا رکھنے پر خورشیدشاہ کاکردارنمایاں رہا۔انہوں نے مزید کہا کہ شیخ آفتاب نےہمیشہ آگ کوبجھانےکی کوشش کی ۔شیخ آفتاب نےکوشش کی ہےہاؤس ان آرڈرہواورچلایاجائے۔

صاحبزادہ طارق اللہ نے اظہارخیال کیا کہ کبھی وزیراعظم کوگولی مارگئی توکبھی گھربھیجاگیا،فاٹاکےحوالےسےجوہے وہ کارنامہ تاریخ رقم کرےگا،۔ایوان سےقرآن کےناظرےکابل بھی پاس ہوا۔

انہوں نے کہا کہ اس پراسکولوں میں عملدرآمدبھی شروع ہوگیاہے،جمعہ کوچھٹی کی قراردادکوعملی جامہ نہیں پہنچایاجاسکتا۔

واضح رہے کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت آج  جمعرات کے روز اپنی پانچ سالہ مدت مکمل کررہی ہے۔قومی اسمبلی سمییت صوبائیاں اسمبلیاں آج شب 12  بجے  تحلیل ہوجائیں گی۔ جس سے نگران حکومت کے قیام اور اس سال 25جولائی کوملک میں عام انتخابات کی راہ ہموار ہوگی۔

خیال رہے کہ  وزیراعظم شاہدخاقان عباسی اورقومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف خورشید شاہ نگراں وزیراعظم کے عہدےکیلئے  سابق چیف جسٹس ناصرالملک کو پہلے ہی نامزد کرچکے ہیں۔جسٹس (ر) ناصر الملک کل اپنے عہدے کا حلف اٹھائیں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اپوزیشن لیڈرخورشیدشاہ بھی الوداعی خطاب کریں گے، وزیراعظم کی ہدایت پرحکومت کی کارکردگی رپورٹ تیارکرلی گئی، اپوزیشن لیڈربھی اپوزیشن کےکردارسےمتعلق ایوان کوبریفنگ دیں گے۔