نیب اجلاس میں نوازشریف اور شاہد خاقان عباسی کیخلاف انکوائری کی منظوری

اسلام آباد: چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال کی زیر صدارت ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں نوازشریف اور شاہد خاقان عباسی کیخلاف انکوائری کی منظوری دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق نواز شریف اور شاہد خاقان عباسی پر ایل این جی ٹرمینل کا ٹھیکہ خلاف ضابطہ دینے اور من پسند کمپنی کو 15 سال کا ٹھیکہ خلاف ضابطہ دینے کا الزام ہے جس کی تحقیقات کی منظوری نیب کےایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس میں دی گئی۔ نیب اجلاس چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال کی زیر صدارت ہوا۔

اجلاس میں سابق وزیر اعلیٰ، سابق سیکریٹری کلچر سندھ کیخلاف انکوائری کی منظوری دی گئی ہے جن پر سندھ کلچرل فیسٹیول 2014 میں قواعد کیخلاف ٹھیکہ دینے کا الزام ہے۔

نیب کے اعلامیہ کے مطابق ملزمان پر قومی خزانے کو 127 ملین روپے کا نقصان پہنچانے کا الزام ہے اور سابق وزیراعلیٰ پنجاب، رمضان شوگر ملز انتظامیہ کی انکوائری، پیرا گون ہاؤسنگ سوسائٹی انتظامیہ کے خلاف بھی انکوائری کی منظوری دے دی گئی ہے۔

ملزمان پرمبینہ طور پر دھوکا دہی اور مشتبہ رقوم کی منتقلی کا الزام ہے جبکہ ایڈن ہاؤسنگ سوسائٹی کے محمد امجد اور مرتضیٰ امجد کی انکوائری کی منظوری دی گئی ہے جن پرمبینہ طور پر دھوکا دہی اور مشتبہ رقوم کی منتقلی کا الزام ہے۔

سابق چیئرمین کے پی ٹی اور جی ایم کے خلاف ریفرنس دائر کرنے کی منظوری دی گئی ہے ۔ ملزمان پر غیر قانونی طور پر کنٹریکٹ میں توسیع کرنے کا الزام ہے۔

چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال کا کہنا تھا کہ تمام انکوائریاں مبینہ الزامات پر شروع کی گئیں ہیں اور مبینہ الزامات حتمی نہیں ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ متعلقہ افراد سے قانون کے مطابق مؤقف لیں گے۔