اپوزیشن نےصدارتی انتخاب کے لیے مجھ پر اعتماد کیا ہے، مولانافضل الرحمان

لاہور: جمیعت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کا کہنا ہے اپوزیشن نےصدارتی انتخاب کے لیے مجھ پر اعتماد کیا ہے اورکوشش ہوگی کہ پیپلزپارٹی اپوزیشن کافیصلہ قبول کرے۔

جے یو آئی (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف سے ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کی۔ ملاقات کے بعد دونوں جماعتوں کے رہنماؤں نے میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کی۔

صحافیوں سے بات کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمن کا کہنا تھا کہ شہبازشریف کےگھرپرمتحدہ مجلس عمل کااجلاس ہوا جس میں اپوزیشن نےصدارتی انتخاب کےلیےمجھ پراعتمادکیا۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کے اعتماد سے ہماری حوصلہ افزائی ہوئی ہم  شکریہ کے جذبات کے ساتھ شہبازشریف کے پاس حاضرہوئے۔

مولانافضل الرحمان کا کہنا تھا کہ صدرکے انتخاب کا یہ معرکہ مشترکہ طورپرلڑیں گے اور ہم اس معرکے کو سر کرنے کے لیے تیار ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی کےامیدوارکودستبردارکراناآسان ہے۔  شہبازشریف نے بھی کہا ہے کہ پیپلزپارٹی کو آمادہ کرناچاہیے۔

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ کا کہنا تھا کہ کوشش ہے اپوزیشن جماعتیں ایک امیدوارپرمتفق ہوں اور ہماری کوشش ہے کہ پیپلزپارٹی اپوزیشن کافیصلہ قبول کرے۔ انکا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی حکومتی امیدوارکوکامیابی کاموقع فراہم کررہی ہے ۔ آصف زرداری کےساتھ دیرینہ تعلقات ہیں۔ پیپلزپارٹی نے وزیراعظم کے انتخاب میں بھی ووٹ نہیں دیا۔

اس موقع پر مسلم لیگ (ن) کے رہنما حمزہ شہباز کا کہنا تھا کہ اپوزیشن نے فضل الرحمان کو متفقہ امیدوارنامزد کیا ہے اور کوشش ہےکہ ہمیں بھرپورکامیابی حاصل ہوگی ۔ انہوں نے کہا کہ جوپارٹیاں راضی نہیں انھیں بھی راضی کرنے کی کوشش کریں گے۔

مولانا فضل الرحمان کی صدرمسلم لیگ ن شہبازشریف سے ملاقات کے وقت سردارایاز صادق اوررانا تنویربھی موجود تھے ۔ مذکورہ ملاقات میں ملاقات میں صدارتی الیکشن اور ملکی سیاسی صورتحال پرتبادلہ خیال کیا گیا جبکہ طے ہوا کہ مولانا فضل الرحمان پیپلزپارٹی ودیگرجماعتوں سے ملاقاتوں پرآگاہ کریں گے ۔