ترک صدر کے خلاف ٹوئٹر پر ہیش ٹیگ، عہدہ چھوڑنے کا مطالبہ

انقرہ: ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان کے عہدے سے الگ ہونے کے لیے سوشل میڈیا پر دس لاکھ سے بھی زیادہ لوگوں نے ’’تمام‘‘ یعنی ’’بس بہت ہوا‘‘ کہہ کر اپنی رائے کا اظہار کیا ہے۔

عالمی میڈیا کے مطابق سماجی رابطے کی سیب سائٹ ٹوئٹر پر ترکی زبان میں تمام جس کے مطلب بس بہت ہوگیا ٹرینڈ بن گیا ہے جسے اب تک 10لاکھ سے زائد لوگ استعمال کرچکے ہیں جس کا مقصد ترکی صدر طیب اردگان کا فوری مستعفی ہونے کا مطالبہ ہے۔

سماجی رابطے پر یہ مہم اسوقت تیزی سے منظر عام پر آیا۔ جب ترک صدر نے پارلیمان سے خاطب کرتے ہوئے کہا تھا کہ اگر لوگ چاہتے ہیں کہ وہ اپنے عہدے سے دستبردار ہو جائیں تو وہ اپنا عہدہ چھوڑ دیں گے۔

خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق انھوں نے پارلیمان سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جس دن ہمارے ملک نے تمام (اب بس بہت ہوچکا) کہہ دیا اس دن ہم اپنے عہدے سے دستبردار ہو جائيں گے۔

خیال رہے کہ رجب طیب اردوغان ترکی کی حالیہ تاريخ میں سب سے زیادہ مقبول اور منقسم سیاست داں رہے ہیں۔ انھوں نے ملک پر تقریبا 15 سال حکومت کی ہے اور اس دوران ملک نے تیزی کے ساتھ معاشی ترقی کا منہ دیکھا ہے جبکہ انھوں نے اپنے مخالفوں کے خلاف سخت کارروائی بھی کی ہے۔