اندرونی مسائل کو دانشمندی سے حل کرنے کی ضرورت ہے ، سربراہ پاک بحریہ

کراچی: چیف آف دی نیول اسٹاف ایڈمرل ظفر محمود عباسی کا کہنا ہے کہ ہم دفاعی خود انحصاری کے حصول کے لیے کوشاں ہیں ، ہمیں اپنے اندرونی مسائل کو دانشمندی سے حل کرنے اور ایک مثبت سوچ کے ساتھ آگے بڑھنے کی ضرورت ہے۔

جمعہ کو پاک بحریہ کی لاجسٹکس کمانڈ کی تقسیم ایوارڈز کی سالانہ تقریب پاکستان نیوی ڈاکیارڈ میں منعقد ہوئی جس میں چیف آف دی نیول اسٹاف ایڈمرل ظفر محمود عباسی بطور مہمان خصوصی شریک ہوئے ۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چیف آف دی نیول اسٹاف ایڈمرل ظفر محمود عباسی کا کہنا تھا کہ پاک بحریہ کی لاجسٹکس کمانڈ کو اپنے پیشہ ورانہ امور انتہائی خوش اسلوبی سے انجام دینے پر سراہا۔ انہوں نے کہا کہ لاجسٹکس کمانڈ کی اس بے لوث محنت اور لگن کا اندازہ سال 2017ء کے دوران پاک بحریہ کے جہازوں اورآبدوزوں کی ہمہ وقت دستیابی اور متعدد ملکی و غیر ملکی بحری مشقوں میں بروقت شمولیت سے بخوبی لگایا جاسکتا ہے۔

ایڈمرل ظفر محمود عباسی نے کہا جب بھی ہم کسی امداد پر انحصار کرتے ہیں تو خود انحصار ی کے حصول کا جذبہ ماند پڑنے لگتا ہے۔ ہم دفاعی خود انحصاری کے حصول کے لیے کوشاں ہیں اور اس ضمن میں کیے جانے والے اقدامات ہمارے قومی وقار کا مظہر اور سروس کے لیے ہماری محنت اور لگن کا منہ بولتا ثبوت ہیں۔

ایڈمرل ظفر محمود نے مزید کہا کہ بیرونی دباؤ کے باوجود ہمیں اپنے اندرونی مسائل کو دانشمندی سے حل کرنے اور ایک مثبت سوچ کے ساتھ آگے بڑھنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم ایک غیور قوم ہیں۔ ہماری مسلح افواج ہر قسم کے اندرونی و بیرونی خطرات اور چیلنجز سے نبرد آزما ہونے کے لیے پوری طرح تیار ہیں۔

چیف آف نیول اسٹاف نے مزید کہا کہ ایک جدید اور مستحکم بحریہ نہ صرف وطن عزیز کے تحفظ کے لیے ضروری ہے بلکہ علاقائی امن و استحکام کی بھی ضامن ہے۔ پاکستان نیوی کو ایک جدید اور مضبوط بحری قوت بنانے کے لیے نیول فلیٹ میں نئے جہازوں کی شمولیت ا ور انہیں کارآ مد رکھنے اور مزید موثر بنانے کے لیے تکنیکی صلاحیت کا حصول اتنی ہی اہمیت کا حامل ہے جتناکہ ایک قابل اور پیشہ ورانہ صلاحیتوں کی حامل افرادی قوت ضروری ہے ۔

اس ضمن میں پاک بحریہ نے اپنی حربی صلاحیت کو مزید بہتر بنانے کے لیے جدید ٹیکنالوجی سے لیس بحری جہاز اور ہیلی کاپٹر ز حاصل کیے ہیں۔ چیف آف دی نیول اسٹاف نے کہا کہ پاکستان نیو ی فلیٹ کو جدید خطوط پر استوار کرنے کے ساتھ ساتھ پاک بحریہ اپنی افرادی قوت کو بھی بہترین پیشہ ورانہ تربیت فراہم کرنے اور انہیں جدید ٹیکنالوجی سے روشناس کروانے کی ضرورت سے بھی آگاہ ہے ۔

اُنہوں نے کہا کہ تربیت یافتہ اور ماہر افرادی قوت ہمارا اثاثہ ہے اور ہمیں ا س پر فخر ہے۔ ایڈمرل ظفر محمود عباسی نے اس بات پر زور دیا کہ اسلام کے سنہری اصول کو اپنی ذاتی اور بیشہ ورانہ زندگیوں میں مشعل راہ بناتے ہوئے ہم پاک بحریہ کو قابلیت، صلاحیت اور جنگی تیاری کے بامِ عروج پر پہنچا سکتے ہیں۔

قبل ازیں اپنے خطبہ استقبالیہ میں کمانڈر لاجسٹکس رئیر ایڈمرل ساجد وزیر خان نے سال 2017کے دوران لاجسٹکس کمانڈ کی کارکردگی کا مختصر جائزہ پیش کیا۔ بعد ازیں مہمان خصوصی نے سا ل گذشتہ کے دوران بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے یونٹس میں انعامات تقسیم کیے۔

واضح رہے تقسیم ایوارڈ کی تقریب ہر سال منعقد کی جاتی ہے جس کا مقصد لاجسٹکس کمانڈ کے تحت کام کرنے والے یونٹس کی مجموعی کارکردگی کا جائزہ لینا اور مختلف منصوبوں کی کامیاب تکمیل میں ان کی کوششوں کو سراہنا ہوتا ہے۔