چین نے سی پیک سے متعلق فنانشل ٹائمز کی رپورٹ مسترد کردی

اسلام آباد: فنانشل ٹائمز میں چھپنے والی سی پیک سے متعلق رپورٹ کو چینی سفارت خانے سے مسترد کردی۔

تفصیلات کے مطابق چینی سفارت خانے کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ پاکستان اور چین کے درمیان اقتصادی راہداری کے حوالے سے مکمل اتفاق رائے ہے ، یہ پراجیکٹ دونوں ممالک کے لیے سودمند ہے اور دونوں حکومتیں اس کو پاکستان کی ضروریات کے مطابق اور ترقی کے لیے آگے لے کر بڑھیں گی۔

بیان میں کہا گیا کہ ایسی غیر ارادی اور غلط معلومات پر مبنی رپورٹس سے ظاہر ہوتا ہے کہ رپورٹ مرتب کرنے والے نے پاکستان اور چین کی روایتی دوستی کو مکمل طور پر نظرانداز کیا ہے۔

دوسری جانب ترجمان چینی وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ  پاکستان اور چین کے درمیان سی پیک کی رفتار بڑھانے پر اتفاق ہوا ہے، منصوبے پر مشاورت پاکستان کی معاشی اور سماجی ترجیحات کے مطابق ہو گی۔ 

واضح رہے کہ برطانوی اخبار فنانشل ٹائمز نے دعویٰ کیا ہے کہ پاکستانی حکومت چین کے ساتھ سی پیک معاہدے پر نظرثانی کرے گی جس میں قرض کی ادائیگی اور منصوبوں کی مدت بڑھانے پر غور کیا جائے گا جب کہ چین نے اس حوالے سے معاہدوں پر دوبارہ مذاكرات کرنے پر آمادگی بھی ظاہر کردی ہے۔

اخبار کے مطابق مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد کا کہنا ہے کہ تیاری کے بغیر مذاکرات اور معاہدے کرنے سے چین کو بہت زیادہ فائدہ پہنچا اور چینی کمپینوں کو ٹیکس بریک اور دیگر مراعات دینے سے پاکستانی کمپنیاں نقصان میں ہیں۔

اس انٹرویو کے حوالے سے وزارت صنعت و تجارت نے تردیدی بیان جاری کیا ہے جس میں عبدالرزاق داؤود کا کہنا ہے کہ سی پیک کے بارے میں میرے انٹرویو کے کچھ حصوں کو سیاق و سباق سے ہٹا کر پیش کیا گیا۔