پاکستان اورچین کا اسٹریٹجک تعاون پرمبنی شراکت داری مزید مستحکم کرنے کےعزم کا اعادہ

چینی وزیرخارجہ وانگ ژی نےکہا ہےکہ پاکستان چین کابہترین اورقابل اعتماد دوست ہے،پاکستان کودرپیش مسائل مل کرحل کرلیں گے۔

پاکستان کے دورے پر آئے ہوئے چینی وزیر خارجہ وانگ ژی اور وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اسلام آباد میں مشترکہ کانفرنس کی۔چینی وزیرخارجہ وانگ ژی نے پریس کانفرنس میں کہا کہ دونوں ملکوں کے تعلقات باہمی تعاون، باہمی اشتراک پر مبنی ہیں، چین اپنی خارجہ پالیسی کے مطابق پاکستان کی حمایت جاری رکھے گا۔

انوں نے مزید کہاکہ پاکستان کےدورےکامقصد نئی حکومت کےساتھ رابطےبڑھاناہے،اپنی خارجہ پالیسی میں پاکستان کوانتہائی اہمیت دیتےہیں،شاہ محمودقریشی کےساتھ ملاقات بہت مثبت رہی۔

چینی وزیرخارجہ کا کہنا تھاکہ پاکستان کےساتھ تذویراتی تعلقات مزیدمضبوط بناناچاہتے ہیں،غربت کےخاتمےاورپاکستان کی ترقی کےلیےبھرپور تعاون کریں گے۔

وانگ ژی نے کہا پاکستان کےساتھ جاری تمام منصوبےمکمل کریں گے،دونوں ملکوں کےتعاون سےسرمایہ کاری میں اضافہ اوربیروزگاری میں کمی ہوگی چینی تعاون کامقصدپاکستان میں تعلیم،زراعت ودیگرشعبوں کوبہتربناناہے۔

چینی وزیرخارجہ وانگ ژی نے کہاکہ دنیاسےدہشت گردی کاخاتمہ بھی ہماری ترجیحات میں شامل ہے،معاشی ترقی اورغربت کےخاتمےکےلیےمشترکہ سیمینار منعقد کریں گے،عوامی رابطوں اوردوروں سےمختلف شعبوں میں تعاون بڑھےگا۔

ان کا کہنا تھاکہ افغانستان میں امن واستحکام کےلیےدونوں ملک ملکرکام کریں گے ۔

چینی وزیرخارجہ نے کہاکہ سی پیک سےروزگار کےلاکھوں مواقع پیداہوں گے،سی پیک کےتحت پاکستان میں توانائی اوربنیادی ڈھانچےکےمنصوبےلگے،سی پیک پاکستان کی ترقی اورمستقبل کےحوالےسے اہم منصوبہ ہے۔

وانگ ژی کا کہنا تھاکہ پاکستان مستقبل کی بڑی معیشت اورابھرتی ہوئی منڈی ہے۔

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے پریس کانفرنس میں کہا کہ چینی وزیرخارجہ کی دفترخارجہ آمدپرخیرمقدم کرتے ہیں، وانگ ژی پاکستان کےدیرینہ دوست ہیں،چینی وزیرخارجہ صدر،وزیراعظم،آرمی چیف سےملاقات کریں گے۔

وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی  نے کہاکہ پاک چین دوستی کوعوامی اورحکومتی سطح پربھرپورپذیرائی حاصل ہے،

شاہ محمود  قریشی کا کہنا تھاکہ سی پیک چینی صدرکےون بیلٹ ون روڈوژن کاعکاس ہے، سی پیک پاکستان،خطےکےلیےوسیع ترتذویراتی اہمیت کاحامل ہے سی پیک سےوابستہ چینی شہریوں کاتحفظ اورسلامتی ہماری اولین ترجیح ہے۔

چینی قیادت کےوزیراعظم کےلیےتہنیتی پیغامات پرمشکورہیں،چینی وزیرخارجہ نےنومبرمیں وزیراعظم کودورہ چین کی دعوت دی،ہم نے بھی چینی صدر اوروزیراعظم کو دورہ پاکستان کی دعوت دی ۔

انھوں نے مزید کہاکہ مذاکرات میں دوطرفہ تعلقات اورعالمی امورپربات چیت ہوئی،شاہ محمودقریشی

شاہ محمودقریشی کا کہنا تھاکہ غربت کےخاتمےاورروزگار کےمواقع پیداکرنےکےلیےبات ہوئی،پاکستان اپنی سرزمین دہشت گردی کےلیےاستعمال نہیں ہونےدےگا۔

شاہ محمودقریشی  نے کہاکہ پاکستان نےدہشت گردی کیخلاف جنگ میں اہم کرداراداکیا ،چین نےدہشت گردی کیخلاف پاکستان کی قربانیوں کوسراہا ہے،۔اہ محمودقریشی

وزیرخارجہ نے مزید کہاکہ چین نےعالمی برادری پرزوردیاپاکستان کی قربانیوں کوتسلیم کرے، بین الاقوامی فورمزپربھرپورحمایت پرچین کےشکرگزارہیں پاکستان چین کےساتھ عالمی فورمزپربھی مل کرکام کرتارہےگا چین کے ساتھ ملکرآگےبڑھنے کےعزم کا اعادہ کرتے ہیں۔

چین سےتجارتی تعاون بڑھانےاوربرآمدات کےفروغ پربات  ہوئی پاک چین تعلقات کی خوبصورتی یہ ہےکہیں کوئی تحفظات نہیں ۔

انھوں نے مزید کہاکہ  مائیک پومپیوکےساتھ علاقائی چیلنجز اوردفاعی تعاون پربات ہوئی،امریکی وزیرخارجہ کے ساتھ علاقائی امن وسلامتی پربات ہوئی۔

شاہ محمودقریشی  نے کہاکہ چین کےساتھ برآمدات کےلیےسبسڈیز پربات ہوئی ہے،اقتصادی شعبےکی ترقی کےلیےزراعت کافروغ انتہائی ضروری ہے۔

شاہ محمودقریشی  کا کہنا تھاکہ پاکستان زرعی ملک ہےاس شعبےکی ترقی کےلیےچین کےتجربات سےفائدہ اٹھاناچاہیےہم نےخصوصی اقتصادی زونزکےقیام اورترقی کےلیے بات کی ہے۔