کامن ویلتھ گیمز : پاکستان کا نام روشن کرنیوالی ریسلنگ ٹیم کی وطن واپسی

لاہور : کامن ویلتھ گیمز میں سونے کا تمغہ جیتنے والے ریسلنگ ٹیم کی وطن واپس پہنچ گئی، ریسلنگ ٹیم کےکھلاڑیوں کاایئرپورٹ پہنچنےپرپرتپاک استقبال کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق کامن ویلتھ گیمز میں ملک کا نام روشن کرنے والے اور پاکستان کو سونے کا میڈل جیتنے والی قومی ریسلنگ ٹیم وطن واپس پہنچ گئیں۔

لاہور کی علامہ اقبال انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر کامن ویلتھ گیمز میں سونے اور کانسی کے تمغے دلانے والے پہلوانوں کا پرتپاک استقبال کیا گیا۔ پرستاروں نے “پاکستان زندہ باد” کے خوب نعرے لگائے۔

مزید پڑھیے: کامن ویلتھ گیمز،پاکستان نےپہلا گولڈمیڈل جیت لیا

کھلاڑیوں نےگیمزکےدوران شاندارکارکردگی کامظاہرہ کیا۔ انعام بٹ نے86کلوگرام ویٹ کیٹگری میں سونےکامیڈل، محمدبلال نے57کلوگرام کیٹیگری میں اور طیب رضانے125کلوگرام ویٹ کیٹیگری میں کانسی کا تمغہ اپنے نام کیا۔

دوسری جانب علامہ اقبال انٹرنیشنل ایئرپورٹ میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے ریسلرانعام بٹ کا کہنا تھا کہ جیت کاکریڈٹ والدین اوراساتذہ کوجاتا ہے۔

انکا کہنا تھا کہ میں کبھی ہمت نہ ہارنے پر یقین رکھتا ہوں،ریسلنگ اور ویٹ لفٹنگ پاکستان کے مقبول کھیل ہیں۔

سلمان بٹ نے حکومت پاکستان سے شکوہ کیا کہ حکومت نےمیرےمطالبےکوپورا نہیں کیا،اپنی مدد آپ کے تحت ٹریننگ کوجاری رکھا۔ 3ماہ پہلےحکومت سےٹریننگ کےلیے10لاکھ روپےکامطالبہ کیاتھا۔

ریسلر سلمان بٹ کا مزید کہنا تھا کہ بھارت کےریسلرامریکامیں 6ماہ کی ٹریننگ کرکےآئے، اگرہمیں بھی ٹریننگ اچھی ملتی توپاکستان گولڈمیڈل زیادہ جیتتا۔ ریسلنگ،ویٹ لفٹنگ پرتوجہ دی جائےتومزیدکامیابی حاصل کرسکتےہیں۔