آسٹریلیا میں پاکستانی طالب علم پر نسل پرستوں کا بہیمانہ تشدد

سڈنی : آسٹریلیا کی نیوکاسل یونیورسٹی میں زیرتعلیم پاکستانی طالب علم عبداللہ قیصر پر نسل پرستوں نے بہیمانہ تشددکے ناک کی ہڈی توڑدی۔

غیرملکی میڈیا کے مطابق عبداللہ قیصر کو گزشتہ رات  نسل پرستوں نےاس وقت تشدد کا  نشانہ بنایا جب  وہ  لائبریری  جا  رہا تھا  نسل پرستوں کا کہنا تھا کہ پاکستان جاؤ، تمہارا یہاں سے کوئی تعلق نہیں۔اس دوران ایک شخص نے عبداللہ کی ناک پر مکا مارااور ایک خاتون نے موبائل فون بھی چھین لیا۔

عبداللہ قیصر زخمی حالت میں کارچلا کے   یونیورسٹی کے جم پہنچے، جہاں انتظامیہ نے انہیں فرسٹ ایڈ دینے کے بعد پولیس اور ایمبولینس کو بلوایا۔

پولیس کے مطابق واقعے کی تحقیقات کا آغاز کرلیا ہے، تحقیقات میں کیپمس گراؤنڈ کے سی سی ٹی وی کیمروں کی بھی مدد لی جارہی ہے۔

واضح رہے کہ  21سالہ عبد اللہ قیصر انجینئرنگ کی تعلیم حاصل کرنے کے لیے گزشتہ برس فروری میں نیوکاسل  آئے تھے۔