مقدمات کا مقصد مجھے نکالنا اور مشرف کیخلاف کارروائی سے  روکنا تھا،نوازشریف

اسلام آباد: سابق وزیراعظم نوازشریف کا کہنا ہے کہ مجھ پر بنائے گئے مقدمات کا مقصد مجھے وزیراعظم ہاؤس سے نکالنا اور مشرف کیخلاف کارروائی سے  روکنا تھا۔

احتساب عدالت کے بعد نواز شریف پنجاب ہاؤس پہنچے جہاں انہوں نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جو بیان میں نے عدالت میں دیا وہی سب کے سامنے پڑھناچاہتا ہوں۔انکا کہنا تھا  کہ میرے لیےتوہر جگہ عدالتیں لگائی گئی ہیں۔میرےخلاف کیسزکاپس منظرکیاہےسب بتاناچاہتاہوں۔

نوازشریف نے کہا کہ میرےخلاف جھوٹے،بےبنیاد مقدمات کاسبب یہی تھا کہ میں نےسرجھکاکرچلنےسےانکارکیاتھا۔انہوں نے کہا کہ میری نااہلی کے محرکات قوم جانتی ہے ،پاناماپیپرزمیں کھوکھلے مقدمات بنائے گئے۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ مشرف کیخلاف مقدمہ شروع ہوتےہی اندازہ ہوگیاتھا کہ ایک ڈکٹیٹرکوعدالت کےکٹہرےمیں لاناکوئی آسان کام نہیں۔کوئی قانونی غداری کےمرتکب آمرکوہتھکڑی نہ ڈال سکا اور مشرف کیخلاف مقدمےکےلیےمجھےدباؤکانشانہ بنناپڑا۔

انہوں نے کہا کہ دباؤکارگرنہ ہواتودھرنوں کاسلسلہ شروع کیاگیا،دھرنوں کےدوران جوکچھ ہواسب قوم کےسامنےہے۔پارلیمنٹ،پی ٹی وی کچھ بھی فسادی عناصرسےمحفوظ نہ تھا۔

نواز شریف نے کہا کہ دھرنوں کامقصدمشرف کیخلاف کارروائی کوروکناتھا،دھرنوں کےذریعےلشکرکشی کرکے مجھےمستعفی ہونےیا رخصت  پرجانےکاپیغام دیاجارہاتھا لیکن میں اپنی ذات کوخطرےمیں ڈال کرآمرکیخلاف کارروائی پربضدرہا۔

نواز شریف نے کہا کہ  میں نے مشرف کےغیر آئینی اقدام پرواضح موقف اختیار کیا تو مجھے نکال دیا گیا ،وقت آگیاغداری کرنے والےآمر کو کٹہرےمیں کھڑاکیاجائے۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ آصف زرداری نےکہامشرف کےمارشل لاء کی توثیق کرنی ہے،زرداری صاحب نےکہاکہ یہ مصلحت کاتقاضہ ہے۔میں نےکہامصلحتو ں نےہی جمہوریت کوکمزورکیاہے۔

نواز شریف نے کہا کہ آمریتوں نےپاکستان کوگہرےزخم لگائےہیں ،مسلح افواج کوعزت کی نگاہ سے دیکھتاہوں۔

نواز شریف نے کہا کہ کاش عوام بھٹوسےپوچھ سکتےکیوں پھانسی پرچڑھایاگیا،انہوں نے کہا کہ مجھ پرلگائےگئےتمام الزامات لغواورجھوٹ ہیں۔

مسلم لیگ ن کے سابق صدر نے کہا کہ سب سےبڑی عدالت اللہ ہی کی عدالت ہے،ہم سب نےایک دن اللہ کی عدالت میں پیش ہوناہے۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ مجھےوطن کی مٹی کایک ایک ذرہ جان سےپیاراہے،میں نے جیل،جلاوطنی سمیت متعددمصائب کاسامنا کیا۔کسی سےحب الوطنی کاسرٹیفکیٹ لینااپنی توہین سمجھتاہوں۔

نواز شریف نے کہا کہ پاکستان میں موٹرویزاورشاہراہوں کاجال بچھایا، 5سال میں گزشتہ65سال جتنےکام کیے۔انہوں نے کہا کہ بلوچستان اورکراچی کوہم نے امن دیا،صحت کارڈزکےذریعےعلاج کی سہولتیں دیں۔

انہوں نے کہا کہ مادروطن کےدفاع کےلیےسینہ سپرسپوت قابل عزت ہیں،بھارت کےایٹمی دھماکوں کاجواب دینےکافیصلہ کیا۔انہوں نےمزید کہا کہ جوابی ایٹمی دھماکوں کےلیےچندگھنٹےکی بھی تاخیرنہیں کی۔عالمی طاقتوں نےنصف درجن فون کیے،5ارب ڈالرکی پیشکش بھی ریکارڈکاحصہ ہےلیکن ہم نے وہی کیاجوپاکستان کےمفادمیں تھا۔

نواز شریف نے کہا کہ پاکستان میں موٹرویزاورشاہراہوں کاجال بچھایا، 5سال میں گزشتہ65 سال جتنےکام کیے۔انہوں نے کہا کہ بلوچستان اورکراچی کوہم نے امن دیا،صحت کارڈزکےذریعےعلاج کی سہولتیں دیں۔

نوازشریف نے کہا کہ بجلی کی پیداوارمیں10ہزارمیگاواٹ کا اضافہ کیا،دہشت گردی کاآنکھوں میں آنکھیں ڈال کرمقابلہ کیا۔نواز شریف نے کہا کہ 12کتوبر1999کومشرف نےآئین سےبغاوت کی،اقتدارپرقبضہ کیا،اس وقت منصفوں نےمشرف کےہاتھ پربیعت کی۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ مشرف نےایمرجنسی کےنام پرپھرمارشل لاء لگایا،مشرف نےجج صاحبان کوگھروں میں قید کیا۔ دنیامیں اس شرمناک فعل کی نظیرشایدکہیں ہی ملتی ہو۔

واضح رہے کہ سابق وزیراعظم نے آج ایون فیلڈ ریفرنس کے دوران عدالت کی جانب سے پوچھے گئے تمام 128 سوالات کے جواب مکمل کیے۔