وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس، 8 نکاتی ایجنڈے پر غور

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کی زیرِ صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس وزیراعظم ہاؤس میں ہوا، جس کے دوران 8 نکاتی ایجنڈا زیرِ غور آیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس وزیر اعظم آفس میں ہوا۔ اجلاس میں وفاقی کابینہ 9 نکاتی ایجنڈے کی منظوری دی گئی۔

 اجلاس کے دوران وزارتوں اور ڈویژنز کے صوابدیدی فنڈز واپس لینے کے فیصلے کی منظوری دی گئی، جس کے بعد وزارتیں اور ڈویژنز صوابدیدی فنڈز استعمال نہیں کرسکیں گے۔

اجلاس میں کابینہ کو بیرون ملک سےلوٹی رقم واپس لانےپربریفنگ دی گئی، بریفنگ وزیراعظم کےمعاون خصوصی برائےاحتساب شہزاداکبرنے دی۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ کسی بھی سرکاری ملازم کو نوکری سے برطرف نہیں کیا جائے گا۔ فیصلے کا اطلاق ریگولر، کنٹریکٹ اور ایڈ ہاک پر رکھے ملازمین پر بھی ہوگا۔

فیصلے میں کہا گیا کہ سرکاری ملازم کو ڈسپلن کی خلاف ورزی پر بھی برطرف نہیں کیا جا سکے گا تاہم حکم کا اطلاق عدالتی فیصلوں پر نہیں ہوگا۔ فیصلے کا نوٹی فیکیشن جاری کردیا گیا ہے۔

دوسری جانب پاکستان میں انسانی حقوق کے تحفظ کے لیے وزارت انسانی حقوق کی سفارشات بھی پیش کی گئیں۔

اجلاس میں پاکستان انٹرنیشل ایئر لائنز پی آئی اے کا چارج سیکریٹری ایوی ایشن کے حوالے کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔اس کے علاوہ اجلاس میں پاکستان اور چین میں شعبہ تعلیم میں تعاون کے لیے معاہدے کی منظوری دی گئی۔