سپریم کورٹ نےنوازشریف کیخلاف توہین عدالت کی درخواست خارج کر دی

supreme-court

اسلام آباد : سپریم کورٹ نےنوازشریف کیخلاف توہین عدالت کی درخواست خارج کر دی ۔

چیف جسٹس میا ں  ثاقب نثار کی  کی سربراہی میں3رکنی بینچ نے کیس کی  سماعت کی ۔

درخواست گزار احسن الدین نے اپنا موقف بتاتے ہوئے کہاکہ نوازشریف نےعدالتی توہین کی، نوازشریف نےلاہورریلی کےدوران عدلیہ کومتنازع بنایا،نوازشریف نےکہاقوم کونااہل کیاگیاانہیں نہیں ،نواز شریف نےکہایہ20کروڑعوام کےووٹ کی توہین ہے۔

جس پر چیف جسٹس نے ریماکس دیئے کہ ہرآدمی کوکمنٹ دینےکاحق حاصل ہے،کسی اورجگہ حدودکراس ہوتی ہوگی،اس سےزیادہ بھی کسی جگہ کچھ کہاگیاہوگا ۔

لیگی رہنماؤں کے خلاف توہین عدالت کی درخواستیں

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے آج سابق وزیراعظم نواز شریف، وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق اور وزیر نجکاری دانیال عزیز کے خلاف دائر توہین عدالت کی درخواستوں پر بھی سماعت کی جنہیں بعدازاں ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کردیا گیا۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ ہم نہیں سمجھتے جو مواد ہمارے سامنے پیش کیا گیا وہ توہین عدالت سے متعلق ہے، قانون کے مطابق فیصلوں پر تبصرہ ہر آدمی کا حق ہے۔

خیال رہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف توہین عدالت کی درخواست شیخ احسن الدین نے ، سعد رفیق کے خلاف اویس یونس نے اور دانیال عزیز کے خلاف ندیم نثار چوہدری نے دائر کی ہے۔ جس میں درخواست گزاروں نے لیگی رہنماؤں کی عدلیہ مخالف تقاریر کی بنیاد پر توہین عدالت کا الزام عائد کیا ہے ۔