پی ٹی آئی حکومت کرنے کا جواز کھو چکی ہے، فضل الرحمان

گوجرانوالہ: جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانافضل الرحمان کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی حکومت کرنے کا جواز کھو چکی ہے۔

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانافضل الرحمان کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ جہانگیر ترین عہدے پرموجود ہیں تو کمزوروں کو سزا دینے کا کیا فائدہ ہے اور پی ٹی آئی حکومت کرنے کا جواز کھو چکی ہے۔

مولانافضل الرحمان کا کہنا تھا کہ ایم پی ایز کے ایشو کے بعد پی ٹی آئی حکومت چھوڑ دے جبکہ خیبر پختونخوا معاشی طور پر تباہ ہو چکا ہے اور خیبر پختونخوا پر 300 ارب روپے کا قرض ہے۔ پی ٹی آئی اتنی با اصول ہے تو حکومت چھوڑ دے۔

سربراہ جے یوآئی ف مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ قبائل کے ہرمعاملے میں ہمیشہ ان کے ساتھ چل رہے ہیں اور لاپتہ لوگوں کے بارے میں پہلی تقریرمیں نےکی تھی۔ ادارے جب دائرہ اختیار سے نکل کر فیصلےکریں تو پذیرائی نہیں ملتی ہے۔

مولانافضل الرحمان کا کہنا تھا کہ عوام کو عدالت سے انصاف کی توقعات ہوتی ہیں اور متاثرین چیخ چیخ کر کہہ رہے ہیں انصاف نہیں ہورہا ہے۔ نیب سیاسی انتقام لینے کے لئے مشرف کا بنایا ہوا ادارہ ہے۔

سربراہ جے یوآئی ف مولانافضل الرحمان کا کہنا تھا کہ شریف فیملی کو کلثوم نواز کی تیمارداری کا حق ملنا چاہیے اور عمران خان کو سیاست میں تنگ نظری کا مظاہرہ نہیں کرنا چاہیے۔

مولانافضل الرحمان کا کہنا تھا کہ چوہدری نثار جیسے باعزت آدمی کو پی ٹی آئی میں نہیں جانا چاہیے اور سفارتکار جب استثناء کا فائدہ اٹھاتے ہیں تو عام آدمی سوال اٹھاتے ہیں۔ کشمیر میں آصفہ کے مسئلے پر تمام ادارے آواز اٹھا رہے ہیں۔

سربراہ جے یوآئی ف مولانافضل الرحمان کا کہنا تھا کہ افغان پالیسی بنانے میں ہم خودمختار نہیں ہیں اورافغانستان میں امریکا بھارت کو سپورٹ کر رہا ہے۔ چائنہ کے ویژن کا پہلا زینہ سی پیک ہے۔

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانافضل الرحمان کا مزید کہنا تھا کہ بھارت اور امریکا سے خیر کی توقع نہیں رکھنی چاہیے اور بجلی کی کوئی کمی نہیں، عوام استعمال زیادہ کررہے ہیں۔ ہمارے پاس آئندہ 20 سال تک غلطی کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔