روس میں پنشن اصلاحات کی تجویز پر شہریوں کا احتجاج

ماسکو: روس میں صدر پیوٹن کی جانب سے ممکنہ پنشن اصلاحات کے معاملے پر ہزاروں افراد احتجاج کرتے سڑکوں پر نکل آئے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ماسکو میں کمیونسٹ پارٹی کی جانب سے کیے جانے والے احتجاج میں ہزاروں افراد نے شرکت کی اور حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا کہ وہ ریٹائر افراد کی کمائی کو چرانے کی منصوبہ بندی کررہے ہیں۔

ماسکو پولیس کے مطابق کمیونسٹ پارٹی کی ریلی میں 6 ہزار افراد شریک تھے۔

روس کے دیگر شہروں سینٹ پیٹرزبرگ میں بھی احتجاج کیا گیا جہاں 2500 کے قریب افراد نے سڑکوں پر آکر احتجاج کیا۔

مغربی ممالک کی جانب سے عائد پابندیوں کے باعث ہونے والی معاشی بحران کے مدنظر روسی حکومت نے ریٹائرمنٹ کی عمر میں بتدریج اضافہ کرنے کا منصوبہ بنایا ہے جو گزشتہ 90 برس کے دوران ایک بڑی تبدیلی ہے۔

 واضح رہے کہ روسی صدر پیوٹن نے ٹیلی وژن میں اپنے غیرمعمولی خطاب میں پیش کی گئیں اصلاحات میں نرمی لانے کی تجویز پیش کی تھی۔

انہوں نے خواتین کی ریٹائرمنٹ کی عمر میں 5 برس کا اضافہ کرکے 60 سال کرنے کی تجویز دی تھی جبکہ اس سے قبل 8 برس کا اضافہ کیا گیا تھا۔

سرکاری اعلان کے مطابق مردوں کی عمر میں بھی 5 سال کا اضافہ ہوگا اور ریٹائرمنٹ کی عمر کی حد 65 برس ہوگی۔