چیف جسٹس کاحمزہ شہباز کے گھر کے باہر سے رکاوٹیں ہٹانے کا حکم

لاہور: چیف جسٹس نے حمزہ شہبازکےگھرکےباہرسےرکاوٹیں ہٹانےکاحکم دےدیا۔

سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں بیریئرز لگا کر رکاوٹیں کھڑی کرنے سے متعلق ازخودنوٹس کیس کی سماعت ہوئی۔
سماعت کے دوران چیف جسٹس نے عدالتی حکم پر مکمل عملدرآمد نہ کرنے پر چیف سیکرٹری پنجاب زاہد سعید کی سخت سرزنش کی۔
چیف سیکرٹری پنجاب نے عدالت کو بتایا کہ حمزہ شہباز کے گھر کا راستہ بند کرنے والا گیٹ ہٹا دیا گیا اور اب صرف بیریئرز لگائے گئے ہیں۔
جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ کون ہےحمزہ شہباز،میں کسی حمزہ شہبازکونہیں جانتا، حمزہ شہبازایم این اےہیں اوروزیراعلیٰ پنجاب کےبیٹےہیں۔ حمزہ کوابهی طلب کرکےپوچھ لیتےہیں ان کی جان کوکیاخطرہ ہے۔ جان کو خطرہ ہے تو اپنی رہائش گاہ تبدیل کر لیں۔ یہ وہاں کیوں نہیں چلےجاتےجہاں جان کوخطرہ نہ ہو، میں چیف جسٹس ہوں،میری رہائش گاہ کےباہرتورکاوٹ نہیں۔

چیف جسٹس نے کہاکہ حمزہ شہباز کے گهر کے باہر رکاوٹیں ختم کریں،پرائیوٹ کار میں خود دورہ کر کے چیک کروں گا۔ حمزہ شہبازکےگهرکےاردگرد ہماری بہنیں اوربیٹیاں بهی رہتی ہیں،اگر آئندہ کوئی شکایت آئی تو سخت ایکشن لوں گا۔

جس پر چیف سیکریٹری نے عدالت کو بیریئر ہٹانے کی یقین دہانی کروائی۔

واضح رہے کہ حمزہ شہباز کی رہائش گاہ لاہور کے علاقے ماڈل ٹاؤن کے ایچ بلاک میں واقع ہے جبکہ ان کے والد شہباز شریف کی رہائش گاہ بھی قریب ہی واقع ہے۔