سپریم کورٹ کا 15 دن میں خواجہ سراؤں کے شناختی کارڈ کے مسائل حل کرنے کا حکم

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے 15 دن میں خواجہ سراؤں کے شناختی کارڈ کے مسائل حل کرنے کا حکم دے دیا۔

چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے خواجہ سراؤں کے شناختی کارڈز سے متعلق از خود نوٹس کیس کی سماعت کی۔

دوران سماعت سیکریٹری سوشل ویلفیئرپنجاب نے عدالت کو بتایا کہ 1471خواجہ سراؤں کو شناختی کارڈ  جاری کیے جاچکے جب کہ 530 شناختی کارڈکے لیے کیس رجسٹرڈ کیے ہیں اور ساتھ ہی تصدیق کے لیے ون ونڈو کام جاری ہے۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے استفسار کرتے ہوئے کہا کہ میں سمجھا تھا سب خواجہ سراؤں کوشناختی کارڈزجاری ہوگئے ہوں گے جس پر سیکریٹری سوشل ویلفیئر پنجاب نے آگاہ کیا کہ 30 فیصدخواجہ سراؤں کوشناختی کارڈز جاری ہوچکے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ حکم صرف  پنجاب کے لیے نہیں پورے ملک کے لیے تھا۔ سیکریٹری لاءاینڈ جسٹس نے کہا کہ چاروں صوبوں کے نمائندوں کی کمیٹی بنادی ہے۔

دوران سماعت خواجہ سراالماس بوبی نے عدالت میں کہا کہ میں اس کیس میں درخواست گزارہوں۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آپ بیٹھ جائیں یہاں آپ کی سیاست نہیں چلنے دوں گا۔ انہوں نے متعلقہ حکام کو  15 دن میں خواجہ سراؤں کے شناختی کارڈ کے اجرا کا حکم جاری کرتے ہوئے کیس کی سماعت غیر معینہ مدت تک کے لیے ملتوی کردی۔