دانیال عزیزکے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت16 اپریل تک ملتوی

اسلام آباد : سپریم کورٹ آف پاکستان نے وفاقی وزیر برائے نجکاری دانیال عزیز کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت 16 اپریل تک ملتوی کردی ۔

تفصیلات کے مطابق جسٹس شیخ عظمت سعیدکی سربراہی میں3رکنی بنچ سماعت کررہاہے۔ سماعت میں ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ ایک گواہ عدالت میں حاضرہے،دوسرا گواہ تاحال عدالت میں نہیں پہنچ سکا۔ جس پر جج شیخ عظمت سعید نے کہا کہ کونساگواہ نہیں آیا؟

جس کے بعد ڈی جی پیمراحاجی آدم بطورپیمراگواہ عدالت عظمیٰ میں پیش ہوئے انہوں نے عدالت کو بتایا کہ ٹی وی پروگرامزکی مانیٹرنگ میری ذمہ داریوں میں شامل ہے۔ جوبیان دوں گا،سچ پر مبنی دوں گا،عدالت میں غلط بیانی نہیں کروں گا۔

گواہ حاجی آدم نے عدالت عظمیٰ کو بتایا کہ پی آئی ڈی کی 8 ستمبر2017 کی تقریرمکمل دیکھی اورسنی، میں 8 ستمبرکی تقریرکا متن بھی ساتھ لایا ہوں۔

سپریم کورٹ میں 15 دسمبر2017 کی دانیال عزیزکی ویڈیو کلپ چلائی جائے، جسٹس عظمت سعید شیخ نے کہا کہ یہ نہ ہوکسی اورجرم میں فرد جرم عائد کرنی پڑجائے۔

عدالت عظمیٰ میں دانیال عزیزکا احاطہ عدالت میں میڈیا ٹاک کا کلپ چلایا گیا، گواہ حاجی آدم نے کہا کہ کلپ کی اپنے ریکارڈ سے تصدیق کرسکتا ہوں، جسٹس عظمت سعید شیخ نے کہا کہ کارٹون نیٹ ورک دیکھ لیا کریں۔

دانیال عزیز کے وکیل نے سوال کیا یہ ایک مخصوص ٹی وی پرچلنے والی کلپ ہے جس پر گواہ حاجی آدم نے جواب دیا کہ یہ کلپ مخصوص ٹی وی کے پروگرام میں چلایا گیا۔

وفاقی وزیربرائے نجکاری دانیال عزیز کے وکیل نے کہا کہ ایک اورکلپ بھی چلایا گیا تھا، ڈی جی پیمرا نے مبینہ توہین آمیزکلپ کی سی ڈی عدالت میں جمع کرا دی جسے عدالت نے ریکارڈ کا حصہ بنا دیا۔

دانیال عزیز کے وکیل علی رضا نے گواہ حاجی آدم سے سوال کیا کہ کلپ کا سورس ویریفائی کرسکتے ہیں جس پر انہوں نے جواب دیا کہ نہیں سورس ویریفائی نہیں کرسکتا۔

گواہ سے سوال کیا گیا کہ جوویڈیو کلپ چلا کیا وہ پہلے سے ایڈٹ ہوسکتا ہے جس پرگواہ حاجی آدم نے جواب دیا کہ جی کلپ پہلے ایڈٹ ہوسکتا ہے۔

دانیال عزیز کے وکیل نے کہا کہ پیمرارولز کے مطابق لائسنس ہولڈر کسی دوسرے کا کلپ نہیں چلا سکتے، کیا آپ نے مخصوص چینل کو کلب چلانے پرنوٹس جاری کیا۔

ڈی جی مانیٹرنگ پیمرا حاجی آدم نے جواب دیا کہ مخصوص چینل کودوسرے چینل کا کلپ چلانے پرنوٹس نہیں دیا، دانیال عزیز کے وکیل نے سوال کیا کہ کیا21 دسمبر2017 کو یہ کلپ دوبارہ چلا؟ گواہ حاجی آدم نے جواب دیا کہ نہیں دوبارہ نہیں چلا۔

عدالت نے جراح مکمل کرنے کے بعد کیس کی سماعت 16 اپریل تک ملتوی کردی۔

واضح رہے کہ 13 مارچ کو توہین عدالت کیس میں سپریم کورٹ آف پاکستان نے آئین کے آرٹیکل دو سو چار کے تحت وفاقی وزیر برائے نجکاری دانیال عزیز پر فرد جرم عائد کی تھی۔

فرد جرم کے مطابق دانیال عزیز نے جج کی تضحیک اورعدالت کی توہین کی۔ انہوں نے 8ستمبر کو کہا تھا کہ نگران جج نے نیب لاہور کو طلب کرکے تیار کیا۔ یہ سب اسکرپٹ کے مطابق کیا گیا تھا۔