پرویز مشرف نے ن لیگ توڑنے کے لیے نیب بنائی، شاہد خاقان عباسی

کلرسیداں: سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ پرویز مشرف نے ن لیگ توڑنے کے لیے نیب بنائی ہے۔

سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اخلاقی فتح ن لیگ نے حاصل کرلی ہے، عوام نے فیصلہ دے دیا ہے اور وفاداریاں بدلنے والے لوگ انتخابات میں کامیاب نہیں ہوں گے۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی نے 5 سال میں کچھ نہیں کیا ہے اور فیصلے کا اختیار صرف عوام کو حاصل ہے۔ ملک کی معیشت صرف ن لیگ مضبوط کرسکتی ہے اور نوجوانوں کو روزگار الزامات سے نہیں معیشت مضبوط ہونے سے ملے گا۔

سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن اور نگراں حکومت انتخابات کو شفاف بنائے اور آج سب سے زیادہ ضرورت ہے انتخابات کو غیر متنازع بنایا جائے۔ پی پی 10 کی پاکستان میں خصوصی اہمیت ہے اور جس دن قمر الاسلام کو ٹکٹ ملا اگلے دن انہیں نیب نے پکڑ لیا۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ قمر الاسلام پر کوئی کیس نہیں پھر بھی وہ گرفتار ہیں اور قمر الاسلام کو ٹکٹ ملنے سے پہلے بھی گرفتار کیا جاسکتا تھا۔ یہ ہی بتا دیا جائے قمر الاسلام کا کیا قصور ہے؟

سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ ہم سب نے نیب کے کیس بھگتے ہیں، ان میں کوئی حقیقت نہیں ہے اور قانون کا تقاضہ ہوتا ہے، الزام لگائیں اور پھرثابت کریں۔ ایسے واقعات الیکشن کو متنازع بنا رہے ہیں اور وفاداریاں بدلوائی جارہی ہیں۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ جیپ کے نشان پر الیکشن لڑنے کا کہا جا رہا ہے اور جس نے عوام کی رائے پر کسی اور کو مسلت کیا گیا وہ عدالتوں میں گھسیٹا، الزام لگائے لیکن پھر بھی ہم نے کام جاری رکھا۔

سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ پرویز مشرف نے ن لیگ توڑنے کے لیے نیب بنائی ہے اور یہ الیکشن ہے سرکس نہیں ہے۔ پی پی، ن لیگ و دیگر پارٹیز کے لوگ ضمیر بیچ کر پی ٹی آئی میں گئے ہیں اور محترمہ کی شہادت پر ہمدردی کا ووٹ پیپلز پارٹی کو ملا۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ محترمہ کی شہادت کے بعد ہمیں زرداری ملا اور ملک کو تباہ کر دیا اور اداروں کے درمیان ہم آہنگی کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ عمران خان نے 2013 میں نیا پاکستان دینے کا کہا تھا اور عوام نے عمران خان کو مسترد کردیا۔