ٹرمپ کا شامی صدر بشار الاسد کو قتل کا حکم ، امریکی صحافی کا دعویٰ

واشنگٹن : امریکی صحافی باب ووڈورڈز نے دعویٰ کیا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے شامی صدر بشارالاسد کو قتل کرنے کا حکم دیا تھا تاہم وزیردفاع نےاس پر عمل سے گریز کیا۔

تفصیلات کے مطابق امریکی صحافی باب ووڈورڈز نے اپنی کتاب فیئر میں انکشاف کیا ہے کہ شام میں کیمیائی حملے کی اطلاعات پر امریکی صدر نے ٹیلی فون پر وزیردفاع جیمز میٹس کو بشارالاسد کو قتل کرنے کا حکم دیا۔

تاہم جیمزمیٹس نے صدرڈونلڈٹرمپ کو جواب دیا کہ وہ معاملہ خود نمٹا دیں گے۔

صحافی نے مزید دعویٰ کیا کہ صدارتی حکم کے 3 روز بعد ہی امریکا کی جانب سے شام پر 59 ٹام ہاک میزائل داغے گئے۔

ووڈورڈز نے دعوی کیا ہے کہ ٹرمپ نے شمالی کوریا پر حملوں کا پلان ترتیب دینے کا حکم بھی دیا تھا اور افغانستان جنگ میں امریکی ناکامی پر جرنیلوں کو بھی کھری کھری سنائی تھیں۔