کیا آپ بھی امتحانات میں کم نمبر آنے کی وجہ سے پریشان ہیں ؟

نیوجرسی : حال ہی میں کی گئی ایک  تحقیق کے مطابق کمرہ جماعت میں لیکچز کے دوران موبائل فون کا استعمال امتحان میں نمبر کم آنے کا باعث بنتا ہے۔

بہت سے طلبعلم شکایات کرتے ہیں کہ کلاس لینے کے باوجود امتحانات میں ہمارے نمبر کم آتے ہیں جس کے باعث وہ زہنی دباو کا شکار بھی رہتے ہیں۔ مگر کوئی بھی اس مسئلے کی جڑ تک پہنچنے کی کوشش نہیں کرتا۔ اس بار بھی سائنس نے ایک بار بھر انسان کی مدد کرتے ہوئے ایک ہم راز فاش کیا ہے۔ اگر آپ بھی اپنے امتحانات میں
نمبر کم آنے کی وجہ سے پریشان ہیں تو کہیں آپ بھی یہی غلطی تو نہیں کر رہے۔

جوں جوں سائنس ترقی کرتی جارہی ہے ویسے ویسے نئی نئی تحقیقات اور نت نئی تجربات سامنے آرہے ہیں۔ اگر کہا جائے کہ موبائل فون کا استعمال انسانی زندگی میں سب سے زیادہ ہے تو غلط نہ ہوگا۔ حتی کہ کھانے کے ٹیبل پر بھی موبائل فون کا استعمال جاری رہتا ہے۔

آج کل طلبا و طالبات کا کمرہ جماعت میں لیکچرز کے دوران ٹیبلٹ، اسمارٹ فونز اور لیپ ٹٓاپ کے استعمال پر کوئی خاص اقدام نہیں کیا جاتا۔ کلاس میں لیکچر کے دوران کبھی ایک تو کبھی دوسرے  طلبعلم کے فون کی گھنٹی بجتی ہے تو کسی کا فون وائیبرٹ ہوتا ہے۔ اس سےناصرف طلبعلم خد بلکہ ساتھ موجود دیگر طلبہ بھی متاثر ہوتے ہیں۔

حال ہی میں امریکی ریاست نیو جرسی میں واقع ایک مشہور رٹگرز یونیوسٹی میں نفسیات کے 118 طلب علموں پر ایک دلچسپ تحقیق کی گئی۔ جس سے حیرت انگیز انکشاف سامنے آیا۔

تحقیق کے دوران کمرہِ جماعت میں استاد کی جانب سے طلباو طالبات کو لیکچر دیا گیا۔ لیکچر کے دوران آدھے بچوں کو اسمارٹ فون استعمال کرنے کی اجازت دی گی جبکہ باقی بچوں کو موبائل کے استعمال سے روک دیا گیا۔اس دوران ایک اور ٹیچر بچوں پر نظریں جمائے کلاس میں موجود تھا تاکہ تمام طلبہ دی گئی ہدایات پر مکمل طور پر عمل کریں۔ لیکچر ختم ہونے کے فوری بعد سب کو گیجڈس استعمال کرنے کی اجازت دے دی گی۔ جس کے بعد ان سے پڑھائے گے لیکچر سے متعلق سوالات پوچھے گیے۔ بظاہرتو فون استعمال کرنے والے بچوں نے جواب دے دیا مگر کچھ عرصے بعدان کی امتحانی صلاحیت متاثر ہوئی۔

لیکچر میں موجود تمام بچوں کا جب آخری امتحان لیا گیا تو وہ تمام طلبہ جنھیں فون استعمال کرنے کی اجازت دی گی تھی ان کے امتحان میں تقریبآ 5 فیصد نمبر کم آئے۔ جو تحقیق کے درست ہونے کو ثابت کرتا ہے۔

اس بات کا ثبوت کچھ عرصہ قبل کی جانے والی تحقیق بھی ہے جو اس مطالعے کی درستگی کی علامت ہے۔  اگرچہ وہ تحقیق زیادہ بڑے پیمانے پر نہیں کی گی مگر انکشاف کیا گیا کہ اگر موبائل فون بند بھی ہو تو بھی انسان کا دھیان بٹاتا ہے۔ جس سے کام کرنے کی صلاحیت متاثر ہوتی ہے۔

یوں تو یہ تمام گیجیڈز انسان کی بھلائی اور مشکل آسان کرنے کے لیے بنائے گئے ہیں مگر ان کے زیادہ استعمال کی وجہ سے رحمت زحمت بنتی چلی جارہی ہے۔