آئین کوردی کی ٹوکری میں پھینکاجارہا ہے، مریم اورنگزیب

Maryam-Aurangzeb

اسلام آباد: وزیرمملکت برائے  اطلاعات مریم اورنگزیب کا کہنا ہے کہ عدالت آئین کی پاسبان ہے لیکن آئین کی کتاب کوردی کی ٹوکری میں پھینکاجارہا ہے۔

مریم اورنگزیب نے  قومی اسمبلی میں اظہارِ خیال کرتے ہوئے کہا  کہ جمہوریت ایک رویے کانام ہے۔جمہوریت یہ ہےکہ ہم آئین اورقانون کے تابع رہیں۔اداروں کی عزت ہی آئین کی عزت ہے۔ہمیں ملک کو اجتماعی طورپرآگے لےکرجاناہوگا۔

 انہوں نے کہا کہ  ماضی میں غلطیاں ہوئیں،پاکستان کی تاریخ سب کےسامنےہے، لیکن کیاآئندہ70سال بھی یہی غلطیاں دہراناچاہتےہیں؟ پرانی باتوں کودہراتے رہےتوپھرہمیں یہاں بیٹھنےکاکیافائدہ۔

 مریم اورنگزیب نے کہا کہ سیاستدانوں پربھینس چوری کےمقدمے ہوتےتھے، کل کہاگیاایک شخص کےکےلیےمحاذآرائی ہورہی ہے۔ ایوان پر حملہ،لعنت بھیجنےوالااس ایوان سےنہیں ہوناچاہیے۔ یہ عوام کی نمائندگی کےساتھ ذیادتی ہے۔

وزیرمملکت نے کہا کہ پاکستانی حکومت کوسیسلین مافیاکہاگیا۔ منتخب وزیراعظم کوگاڈفادریامافیاکہناعوامی ووٹ کی توہین ہے۔ایسا فیصلہ نہیں کریں جس کےبعدثبوت ڈھونڈےجائیں۔ سپریم کورٹ کےفیصلےپرتنقیدکرنانوازشریف کاحق ہے۔

دوسری جانب قومی اسمبلی کے اجلاس میں وزیر نجکاری دانیال عزیز نے عدلیہ کا نام لیے بغیر تنقید کی۔انہوں نے کہا کہ میری ذات کا کردار سارے عوام کے سامنے کھلا ہوا ہے، آپ تشریف لائیں ہم سب کچھ آپ کے سامنے رکھتے ہیں۔

دانیال عزیز نے کہا کہ اسپیکر صاحب آپ کو تو پتہ ہے نہ وہ پھر بلا لیتے ہیں۔ مجھ غریب کو تو انہوں نے پہلے ہی بلایا ہوا ہے۔ کام کرو پھر بھی بلاتے ہیں نہ کریں پھر بھی بلاتے ہیں۔

پی آئی اے کی نجکاری سے متعلق  دانیال عزیز نے کہا کہ وزیراعظم نےنجکاری کی منظوری نہیں دی، ایئرٹرانسپورٹ کا سسٹم علیحدہ کیا جا رہا ہے،49فیصدوفاقی حکومت اپنےپاس رکھےگی۔2سال سےپہلے سےاس پرکام ہورہا ہے۔ پی آئی اے میں صرف ایئرٹرانسپورٹ بزنس کی نجکاری کی جارہی  ہے۔

 انہوں نے مزید کہا کہ کہاجاتاہےحکومت کاآخری سال ہےاس لیےنجکاری نہ کی جائے۔حکومت اپنی مدت کے آخری دن تک کام کرےگی۔انہوں نے کہا کہ  پی آئی اے کو یومیہ 15کروڑ روپے کانقصان ہورہاہے، پی آئی اے کاانتظامی کنٹرول حکومت کےپاس رہےگا