سماجی کارکن مدر ٹریسا کی 21ویں برسی

انسانیت کی خدمت کے لیے زندگی وقف کردینے والی مدر ٹریسا کو دنیا سے رخصت ہوئے 21 برس ہوگئے۔

غریبوں اور بیماروں کی مسیحا نے 26 اگست 1910 میں البانیہ میں پیدا ہوئی۔ انکا اصلی نام ایگنس گونژیا بوجاژیو تھا۔ مدر ٹریسا 19 برس کی عمر میں بھارت میں منتقل ہوئی جہاں انہوں نے بھارت کے شہر دار جلنگ میں مذہبی تربیت حاصل کی اور نن کے طور پر چرچ سے وابستگی اختیار کرلی۔

انکا مقصد صرف مذہبی خدمات سرانجام دینا نہ تھا بلکہ انسانی خدمات انکا اصل مشن تھا جس کے تحت انہوں نے 1948 میں کولکتہ میں فلاحی کاموں کا آغاز کیااور اپنی ساری زندگی دکھی انسانوں کی زندگی کے لیے واقف کردی۔

مدر ٹریسا بیماروں ، غریبوں اور بے کسوں کا سہارا تھیں۔ انہوں نے 1952 میں شفاف دل نامی ادارہ قائم کیا جس کا مقصد غریب افراد کا علاج کرنا تھا۔

مدر ٹریسا کی خدمات بھارت کے علاوہ دنیا کے کونے کونے میں پھیلی ہیں۔ جہاں بوڑھوں، معذور، قریب المرگ، افلاس زدہ اور یتیم بچوں کی دیکھ بھال کی جاتی ہے۔

مدر ٹریسا نن کا روایتی لباس پہننے کے بجائے ساڑھی پہنتی تھیں. مدر ٹریسا کو بھارتی حکومت کی جانب سے 1963 میں پدما شری ایوارڈ اور 1979 میں امن کے نوبل انعام سے نوازا گیا ۔

5 سمتبر 1997 کوطویل علالت کے بعد مدر ٹریسا دنیا سے رخصت ہوگئی اور اپنی یادوں کو لوگوں کے دلوں میں زندہ چھوڑ کر چلی گئیں۔